0

کاغذ سے بنی خوبصورت وگز جیسی ٹوپیاں

یوکرین: کہتے ہیں کہ پرانے زمانے میں اگر کسی شخص کو مذاق اڑوانے کی سزا دی جاتی تو اس کے سر پر کاغذ سے بنی مضحکہ خیز ٹوپی پہنا دی جاتی تھی۔ وہ بے چارہ جہاں کہیں سے بھی گزرتا، لوگ اس کی ہیئت کذائی دیکھ کر اس پر آوازیں کستے لیکن سزا ملنے کی وجہ سے وہ شخص اس کاغذی ٹوپی کو اپنے سر سے اتار نہیں پاتا تھا۔اسی طرح یہ بھی مشہور ہے کہ پرانے زمانے میں اگر کسی شخص کی فریاد بہت سنجیدہ ہوتی تھی تو وہ بادشاہ کے دربار میں کاغذی لباس (کاغذی پیرہن) میں حاضر ہوتا تھا اور اپنی فریاد پیش کرتا تھا۔ہمیں نہیں معلوم کہ ان باتوں میں کتنی سچائی ہے اور کتنا جھوٹ شامل ہے، مگر اتنا ضرور جانتے ہیں کہ ایک یوکرینی نژاد روسی جوڑا پچھلے کئی سال سے کاغذ کو وگز جیسی خوبصورت ٹوپیوں میں تبدیل کرکے فروخت کررہا ہے۔یہ دیمیتری کوزین اور آسیا کوزینا ہیں جو گزشتہ 12 سال سے یہی کام کررہے ہیں۔ یہ دونوں اپنے کام میں اتنے ماہر ہیں کہ کاغذ کو کسی بھی قسم کے پیچیدہ اور نفیس فن پارے میں تبدیل کرسکتے ہیں۔ہوا یوں کہ آسیا کوزینا نے 2008 میں پہلے پہلے کاغذ سے کچھ وگز بنائیں جنہیں اپنے آبائی قصبے چرسکی، یوکرین میں نمائش کیلیے رکھ دیا۔ یہ وگز اتنی مشہور ہوئی کہ صرف پانچ سال بعد ہی مختلف ماڈلز نے اسی طرح کاغذ سے تیار کی ہوئی وگز/ ٹوپیاں پہن کر کیٹ واک بھی شروع

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں