0

ایل او سی پر اشتعال انگیزی؛ بھارتی ناظم الامور کی دفترخارجہ طلبی

اسلام آباد: دفترخارجہ نے لائن آف کنٹرول کی خلاف ورزی پر بھارتی ناظم الامور کو دفترخارجہ طلب کرکے احتجاج کیا ہے۔دفترخارجہ کی جانب سے جاری ہونے والے بیان میں بتایا گیا ہے کہ 11 جنوری کو لائن آف کنٹرول پر ایک بار پھر بھارتی اشتعال انگیزی اور سیز فائرمعاہدے کی خلاف ورزی پر بھارتی ناظم الامور کو دفترخارجہ طلب کرکے شدید احتجاج کیا گیا۔ترجمان دفتر خارجہ عائشہ فاروقی کے مطابق بھارتی ناظم الامور گوراو اہلوالیا کو ڈائریکٹر جنرل جنوبی ایشیا اور سارک زاہد حفیظ چودھری نے طلب کیا، اور 11 جنوری کو کوٹہ اور کریلا سیکٹرز میں جنگ بندی کی خلاف ورزی پر احتجاج کیا گیا۔ڈی جی ساوتھ ایشیا زاہد حفیظ چوہدری نے بھارتی ناظم الامور گورو اہلوالیا کو احتجاجی مراسلہ دیا جس میں بتایا گیا ہے کہ بھارت کی طرف سے 2017 سے جنگ بندی کی خلاف ورزیوں میں تیزی آئی ہے اور اس دوران بھارت کی جانب سے سیکڑوں بار سیز فائر معاہدے کی خلاف ورزی کی گئی۔ بھارتی فوج شہری آبادیوں کو بھاری اسلحے سے نشانہ بنا رہی ہے، اور 11 جنوری کو بھی بلا اشتعال فائرنگ سے چوکی گاوں کے 24 سالہ محمد اشتیاق شہید ہوگئے۔مراسلے میں تنبیہ کی گئی ہے کہ جان بوجھ کر شہری آبادی کو نشانہ بنانا انسانی عظمت، بین الاقوامی انسانی حقوق قوانین کی خلاف ورزی ہے، اور علاقائی امن و سلامتی کے لئے خطرہ ہے۔پاکستان نے بھارت پر 2003 کے جنگ بندی معاہدے کا احترام کرنے کے لیے زور دیتے ہوئے کہا ہے کہ بھارت اپنی افواج کو جنگ بندی پر مکمل عملدرآمد کی ہدایت کرے اور لائن آف کنٹرول اور ورکنگ باونڈری پر امن برقرار رکھے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں