متحدہ نے وزیر اعظم کو چار نکاتی ایجنڈا پیش کیا،نئے صوبوں پر بات نہیں ہوئی،پرویز رشید

وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات پرویز رشید نے کہا ہے کہ ایم کیو ایم نے وزیراعظم سے ملاقات میں چار نکاتی ایجنڈا پیش کیا' ایم کیو ایم کے وفد سے ملاقات میں نئے صوبوں پر کوئی بات نہیں ہوئی۔ بدھ کو اپنے ایک بیان میں انہوں نے کہا کہ ایم کیو ایم اور حکومت میں نئے صوبوں سے متعلق کوئی بات نہیں ہوئی وزیراعظم سے ملاقات میں ایم کیو ایم کے وفد نے چار نکاتی ایجنڈا پیش کیا تھا ۔  وزیراعظم نے ایم کیو ایم کے معاملات حل کرانے کی پیشکش کی تھی۔ وفاقی وزیر اطلاعات پرویز رشید نے کہا ہے کہ شاہ محمود قریشی کا استعفیٰ دینے کو دل نہیں کر رہا، شاہ محمود قریشی بھی جاوید ہاشمی کی طرح استعفےٰ کا اعلان کریں، تحریک انصاف اپنے ساتھیوں پر اعتماد کر کے دیکھے۔ بدھ کو شاہ محمود قریشی کی پارلیمنٹ ہائوس کے باہر پریس کانفرنس پر اپنے ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے پرویز رشید نے کہا کہ پاکستان  ایک باقاعدہ آئینی مملکت ہے ، یہ شاہ محمود کی درگاہ نہیں نہ ہی پارلیمنٹ ان کے نذرانے کا کوئی ڈبا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ شاہ محمود قریشی حقیقت میں استعفیٰ دینا ہی نہیں چاہتے۔ انہوں نے اگر استعفیٰ دینا ہوتا تو جاوید ہاشمی کی طرح اسمبلی میں کھڑے ہو کر استعفیٰ دیتے۔ انہوں نے کہا کہ ارکان کو رقوم اور وزارتوں کی پیشکش کا الزام نہایت شرمناک ہے، استعفوں کی تصدیق کرنا اسپیکر کا فرض ہے، وہ اپنے چیمبر میں بیٹھے انتظار کرتے رہے لیکن کوئی بھی رکن ان کے پاس چل کر اندر نہیں گیا، جس سے ثابت ہو گیا کہ تحریک انصاف والے اپنے ارکان سے زبردستی استعفیٰ دلوا رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ملک میں قانون کی حکمرانی ہے اور رہے گی، یہ شاہ محمود قریشی کی درگاہ نہیں ہے جہاں جو وہ چاہیں گے وہی ہو گا، تحریک انصاف کو عوام پر اور پارلیمنٹ پر اعتبار نہیں تو اپنے ساتھیوں پر تو اعتبار کریں