جماعت اسلامی کے رہنمائوں کو پھانسیاں دی جارہی ہیں،حکومت پاکستان مکمل خاموش ہے،سراج الحق

امیر جماعت اسلامی پاکستان سراج الحق نے کہا ہے کہ تحریک انصاف کے ساتھ صرف خیبر پختونخوا کی حکومت میں ہم اتحادی ہیں ، ملکی اور سیاسی طور پر دونوں پارٹیاں آزاد اور خود مختار ہیں، اسلام آباد میں بحران برپا ہے ، بحران کو کسی بڑے حادثے میں تبدیل ہونے سے بچالیا، جب بھی سیاسی لوگ آپس میں لڑ پڑے تو ملک پر مارشل لاء آگیا اور آئین ختم ہوگیا،بنگلہ دیش میں پاکستان کی حمایت پر جماعت اسلامی کے رہنماؤں کو پھانسی کی سزائیں دی جارہی ہیںلیکن حکومت پاکستان بالکل خاموش ہے، بنگلہ دیش حکومت پر دباؤ ڈال کر سزائیں واپس لینے پر مجبور کرے،غلط نظام کی جگہ دوسرا غلط نظام نہیں چاہتے، اسلامی پاکستان ہی خوشحال پاکستان بن سکتا ہے، جماعت اسلامی کے اجتماع میں غیر مسلموں ، کمیونسٹ اور سوشلسٹ تنظیموں کو بھی دعوت دی ہے ، محرم کا مہینہ ہمیں اتحاد و اتفاق کا درس ، ظلم کے خلاف بغاوت اور جدوجہد کا درس دیتا ہے،حکومت پاکستان افغانستان میں کسی سیاسی جماعت کو سپورٹ کرنے کی بجائے افغان عوام کو سپورٹ کرے ، اگر نئی افغان حکومت بھی امریکی مفادات کے تابع رہی تو افغانستان مشکلات کی دلدل سے نہیں نکل سکے گا، داعش کے بارے میں کوئی معلومات نہیں ، پاکستان میں نظام کی تبدیلی کیلئے دعوت ، تبلیغ اور انتخابات کے راستے کھلے ہیں ۔ وہ اتوار  کو یہاں المرکز اسلامی میں پر ہجوم پریس کانفرنس سے خطاب کررہے تھے