مقدس اوراق کی بے حرمتی ،مشتعل افراد نے مسیحی میاں بیوی کو قتل کر کے جلا ڈالا،وزیر اعلیٰ کا نوٹس ،تحقیقاتی کمیٹی قائم

قصورکے علاقے کوٹ رادھا کشن میں مشتعل دیہاتیوں نے میاں بیوی کوتشدد سے ہلاک کرنے کے بعد لاشوں کو بھٹے میں پھینک کر جلا دیا۔ڈی پی او قصورکا کہنا ہے کہ مقتولین پرمقدس اوراق کی مبینہ بے حرمتی کا الزام لگایا گیا تھا ، 42 افراد کو حراست میں لے کر تحقیقات کر رہے ہیں، وزیراعلیٰ نے واقعے کا نوٹس لے لیا۔پولیس کے مطابق مشتعل دیہاتیوں کے تشدد سے محنت کش خاتون شمع بی بی اور اس کا شوہر ہلاک ہو گئے ، لاشوں کی بیحرمتی کے بعد انہیں بھٹے میں پھینک دیا گیا۔ڈی پی او کے مطابق میاں بیوی پرمقدس اوراق کی بیحرمتی کا الزام لگائے جانے کے بعد واقعہ پیش آیا۔عینی شاہدین کے مطابق سیکڑوں دیہاتیوں نے حملہ کیا،فیکٹری ایریا پولیس کے5 اہلکاربھی موجود تھے مگر بے بس کھڑے رہے ،ہلاک ہونے والے میاں بیوی کے3 کم سن بچوں کو رشتے دار اپنے گھروں میں لے گئے۔مقتول کے بھائی شہبازجاویدکاکہناہے کہ اس کا بھائی اور بھابی اَن پڑھ تھے، ان پرلگایاگیا الزام غلط ہے،انصاف کیلئے ہر دروازہ کھٹکھٹائیں گے۔پولیس نے 67 نامزد اور400 نامعلوم ملزمان کیخلاف دہشت گردی اورقتل کی دفعات کے تحت مقدمہ درج کرکے 42 حملہ آوروں کو گرفتار کر لیا۔وزیراعلیٰ پنجاب نے واقعے کی تحقیقات کے لیے 3 رکنی کمیٹی تشکیل دیدی ہے