Get Adobe Flash player

سعودی عرب،انٹرنیٹ بلاگر کو 10 سال قید، ایک ہزار کوڑوں کی سزا

سعودی عرب میں ایک انٹرنیٹ بلاگر کو 10 سال قید اور ایک ہزار کوڑوں کی سزا سنا دی گئی۔ بلاگر رئوف بداوی کو توہین مذہب اور انٹرنیٹ پر آزاد خیال فورم چلانے کے الزام میں یہ سزا سنا ئی گئی ہے۔سعودی عرب کی ایک عدالت نے انٹرنیٹ بلاگر رئوف بداوی کو توہین مذہب اور انٹرنیٹ پر آزاد خیال فورم چلانے کے الزام میں 10 سال قید اور ایک ہزار کوڑوں کی سزا سنائی ہے۔ مقامی میڈیا کے مطابق عدالت نے اپنے فیصلے میں بلاگر رئوف بداوی کو دو لاکھ 66 ہزار ڈالر جرمانہ ادا کرنے کا حکم دیا ہے۔ حقوق انسانی کی عالمی تنظیم ایمنسٹی انٹرنیشنل نے رئوف بداوی کو دی جانے والی سزا کو شرمناک قرار دیتے ہوئے اسے ختم کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔ بدائوی سعودی عرب میں ایک انٹرنیٹ ویب سائٹ لبرل سعودی نیٹ ورک کے بانی ہیں اور انھیں سال 2012 میں توہین مذہب کے الزام میں گرفتار کیا گیا تھا اور ان کی ویب سائٹ بند کی دی گئی تھی۔ سعودی حکومت کے نزدیک ایک مقامی اخبار کے مطابق بداوی کی اس سے پہلے اپیل مسترد ہو چکی ہے۔ گزشتہ سال ایک سعودی عدالت نے کہا تھا کہ بلاگر رئوف بداوی پر ترک عقیدے کا مقدمہ نہیں چلا جایا سکتا۔ عدالت کو یہ حق حاصل تھا کہ اگر بداوی پر الزام صحیح ثابت ہو جاتا تو وہ انھیں اس معاملے میں موت کی سزا سنا سکتی تھی تاہم ایسے کرنے کے برعکس عدالت نے یہ معاملہ ایک ذیلی عدالت میں منتقل کر دیا تھا۔