Get Adobe Flash player

امریکا،ہیلتھ کیئر فراڈ کے مقدمے میں گرفتار پاکستانی سرجن پر فرد جرم عائد

راجہ زاہد خانزادہامریکی وفاقی تحقیقاتی ادارے ایف بی آئی نے نیو یارک سے تعلق رکھنے والے ایک پاکستانی سرجن ڈاکٹر سید عمران احمد کو جن کو گزشتہ ماہ 85 ملین ڈالرز کے ہیلتھ کیئر فراڈ کے ایک مقدمے میں مبینہ طور پر گرفتار کیا تھا ان پر فرد جرم عائد کر دی گئی ہے۔ استغاثہ کے مطابق ملزم ڈاکٹر سید عمران احمد جن کا تعلق نیو یارک سے ہے اور وہ یہاں پر لوگوں کا وزن کم کرنے سے متعلق نیو یارک کے اسپتالوں میں مریضوں کی سرجری کرتے تھے پر الزام ہے کہ انہوں نے 2011 سے لے کر 2013 تک امریکی حکومت کے زیرانتظام میڈی کیئر کو اس سے متعلق 85 ملین ڈالرز کے اخراجات کے بل داخل کئے۔ اس ضمن میں حکومت کے محکمہ صحت کی جانب سے ان کو 7 ملین ڈالرز سے زائد کی رقم بھی ادا کی گئی۔ گزشتہ روز امریکی اسٹیٹ اٹارنی جنرل ٹرنر بوفورڈ نے عدالت کے مجسٹریٹ کو بتایا کہ ڈاکٹر سید عمران احمد نے جب ایف بی آئی ان سے تحقیقات کر رہا تھا تو انہوں نے چھ دن کے دوران 2 ملین ڈالرز کی رقم پاکستان بھجوائی۔ وفاقی تحقیقاتی ایجنسی نے اپنی تحقیقات میں بتایا ہے کہ اس سلسلے میں دو مریضوں کی جانب سے شکایات موصول ہوئیں جس پر تحقیقات شروع کی گئیں۔