غزہ میں استعمال ہونے والا ڈرون اسرائیلی فوج کے حوالے

فلسطین کے علاقے غزہ کی پٹی میں 2014 کی جنگ میں جاسوسی اور فضائی حملوں کیلئے  استعمال ہونے والا ڈرون طیارہ ہرمز 900 اسرائیلی فوج کے حوالے کردیا گیا ہے۔اسرائیلی میڈیا رپورٹس کے مطابق  ہرمز 300 کو طویل عرصے تک مسلسل تجرباتی عمل سے گذارا گیا جس کے بعد اب اسے باضابطہ طور پر فوج کے حوالے کیا گیا ہے۔اسرائیلی فضائیہ کی طرف سے جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ ہرمز 300 نامی بغیر پائلٹ کے ڈرون طیارے کی اسرائیلی فوج کو حوالگی اہم پیش رفت ہے۔ یہ ڈرون طیارہ ایک ہی وقت میں ایک سے زاید ذمہ داریاں انجام دینے کی صلاحیت رکھتا ہے۔ہرمز 900  زمین سے اڑان بھرنے کے بعد 36 گھنٹے تک فضا میں رہنے کی صلاحیت رکھتا ہے۔ اس کے علاوہ یہ 220 کلو میٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے اڑتا ہے۔ سنہ 2014 میں پہلی بار اس ڈرون کا غزہ کی پٹی میں حملوں میں استعمال کیا گیا۔ اس کے بعد وزارت دفاع کی جانب سے اسے مزید تجرباتی عمل سے گذارنے کے بعد اب باقاعدہ طور پر فوج کے حوالے کردیا گیا ہے۔