انڈسٹری میں چربہ سازی نہ رکی تو ہم اپنی شناخت کھو بیٹھیں گے، سنیتا مارشل

اداکارہ وماڈل سنیتا مارشل نے کہا ہے کہ دوسروں کو کاپی کرنے کا سلسلہ نہ رکا تو ہم اپنی شناخت کھو بیٹھیں گے۔ ادارہ سنیتا مارشل نے کہا کہ ویسے توہمارے ہاں بات بات پرپڑوسی ملک کی فلم انڈسٹری بالی وڈ کوبطورمضبوط ریفرنس بحث کا حصہ بنایا جاتا ہے اوروہاں بننے والی فلموں میں فحاشی، عریانی کے فروغ پربات ہوتی ہے، وہیں ان کے انداز کو اپنانے کے لیے آئٹم سانگز کی شکل میں مقابلے کی کوششیں بھی جاری ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اگر ایک دوسرے پرتنقید کا سلسلہ اور دوسروں کو کاپی کرنے کا سلسلہ نہ رکا توپھرہم اپنی شناخت کھوبیٹھیں گے۔ اس وقت سب سے زیادہ ضرورت ہمیں اپنی شناخت کی ہے، جوفلموں کے ذریعے پوری دنیا میں متعارف کروانا آج کے نوجوان فلم میکر کا مشن ہونا چاہیے۔اداکارہ نے کہا کہ اہم تاریخی واقعات ہوں یا اہم معاشرتی مسائل، ان کو ارباب اختیار اور عوام تک پہنچانے کے لیے فلم کا ہی سہارا لیا جاتا ہے۔ یہی وجہ ہے کہ جہاں دنیا بھرمیں بننے والی فلموں میں لوگوں کی تفریح کوترجیح دیتے ہوئے کمرشل فلمیں بنتی ہیں، وہیں ایسے حساس اوراہم موضوعات پربھی فلمیں معمول کے مطابق بنائی جاتی ہیں جن کا مقصد لوگوں میں شعور اجاگرکرنا ہے۔