مشتاق احمد کی دوبارہ تقرری پر تنقید کا کوئی فائدہ نہیں،توقیر ضیاء

پاکستان کرکٹ بورڈ کے سابق چیئرمین توقیر ضیا ء نے کہا ہے کہ پاکستان کرکٹ بورڈ ماضی میں بھی مشتاق احمد سمیت متعدد ایسے کرکٹروں کی تقرریاں کر چکا ہے جن کے نام جسٹس قیوم اور جسٹس اعجاز یوسف کی رپورٹوں میں شامل رہے ہیں، لہٰذا اب مشتاق احمد کی دوبارہ تقرری پر تنقید کا کوئی فائدہ نہیں ہے۔ایک انٹرویو میں انھوں نے کہا کہ مشتاق احمد نہ صرف پاکستان کرکٹ بورڈ بلکہ انگلینڈ کرکٹ بورڈ کی جانب سے بھی کوچ مقرر ہو چکے ہیں اور اگر ان کی تقرری کو روکنا تھا تو آئی سی سی نے انگلینڈ کرکٹ بورڈ کو کیوں نہیں روکا؟۔توقیرضیا نے الزام لگایا ہے کہ آئی سی سی ایک غیر موثر ادارہ بن کر رہ گیا ہے۔ اور اس کا اینٹی کرپشن یونٹ بھی انتہائی بے اثر ہے، کیونکہ آئے دن کرپشن کے نئے واقعات سامنے آ رہے ہیں، جس کی تازہ ترین مثال نیوزی لینڈ کے بیٹسین لو ونسنٹ کے انکشافات ہیں کہ کرکٹ اب جنٹلمین کا کھیل نہیں رہا۔