نجم سیٹھی برطرفی کیس،عبوری مینجمنٹ کمیٹی کے تمام فیصلے کا لعدم قرار

اسلام آباد ہائی کورٹ نے چیئرمین پی سی بی نجم سیٹھی برطرفی کیس کا تحریری فیصلہ جاری کر دیا۔ عدالت نے عبوری مینجمنٹ کمیٹی کے تمام فیصلے کالعدم قرار دے دیئے اسلام آباد ہائیکورٹ کی جانب سے پی سی بی کی عبوری منیجمنٹ کمیٹی کے تمام فیصلوں کوکالعدم قراردئیے جانے کے بعد معین خان اوروقاریونس سمیت بورڈ میں نوکریاں حاصل کرنیوالے کئی سابق کرکٹرزکی چھٹی ہوگئی جونیئرسلیکشن کمیٹی کے چیف باسط علی بھی اپنے عہدے سے ہاتھ دھوبیٹھے جبکہ سینئراورجونیئرسلیکشن کمیٹیوں میں شامل تمام سلیکٹرزکی نوکریاں بھی گئیں۔ قومی ٹیم کے ہیڈ کوچ مقررہونیوالے وقاریونس، اسپن بالنگ کنسلٹنٹ مشتاق احمد اورغیرملکی بیٹنگ کوچ گرانٹ فلاورکی نیا بھی ڈوب گئی جسٹس نور الحق قریشی کے فیصلے کے مطابق دوران سماعت ذکاء اشرف کی برطرفی کی وجوہات ثابت نہیں کی جاسکیں۔ فیصلے کیمطابق پاکستان کرکٹ بورڈ کی عبوری مینجمنٹ کمیٹی کا نوٹیفیکیشن بد نیتی پر مبنی ہے۔ فیصلے میں کہا گیا ہے کہ بین الصوبائی رابطہ وزارت نے انٹرا کورٹ اپیل کے فیصلے پر عملدرآمد کی یقین دہانی کرائی تھی۔ عدالت نے پی سی بی کی منتخب باڈی کو بلاوجہ ہٹانے کا نوٹیفیکیشن کالعدم قرار دے دیا۔فیصلے میں کہا گیا ہے کہ وزارت بین الصوبائی رابطہ نے ذکا اشرف کی بحالی کے حوالے سے اسلام آباد ہائی کورٹ کے گزشتہ حکم نامے کی تعمیل کی یقین دہانی کرائی تھی۔، پاکستان کرکٹ بورڈ کی عبوری مینجمنٹ کمیٹی کا نوٹی فکیشن بدنیتی پر مبنی ہے لیکن منتخب گورننگ باڈی کو تحلیل کئے جانے کا نوٹی فکیشن کالعدم قراردیا جانا ضروری ہے۔ اس کے علاوہ عدالت نے برطرف ملازمین کو بحال کرنے کے ساتھ ساتھ عبوری مینجمنٹ کمیٹی کے تمام فیصلوں کو اختیارات سے متجاوز قرار دے کر انہیں کالعدم قرار دے دیا ہے۔واضح رہے کہ اسلام آباد ہائیکورٹ  کے  جسٹس نورالحق قریشی  نے ہفتہ کو  چیئرمین پی سی بی تقرراور برطرفی کیس کا فیصلہ سناتے ہوئے پی سی بی کی عبوری انتظامی کمیٹی کا نوٹیفیکیشن  کالعدم قراردیتے ہوئے ذکاء اشرف کو عہدے پر بحال کردیا تھا ۔ اسلام آباد ہائی کورٹ نجم سیٹھی کو دو مرتبہ برطرف اور ذکا اشرف کو چیئرمین  پی سی بی بحال کرچکی ہے۔ دوسری مرتبہ برطرفی پر ذکا اشرف نے عدالتی کارروائی نہیں کی تھی تاہم دیگر برطرف ملازمین کی درخواسtوں پر عدالت عالیہ نے یہ فیصلہ سنایا ہے۔