صنعتکاروں اور تاجروں کے مفادات کا ہر قیمت پر تحفظ کیا جائے گا

لاہور چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کی سربراہی میں منعقدہ اجلاس میں صنعتکار وں و تاجر برادری نے چیئرمین ایف بی آر سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ چھاپے نہ مارنے کے اپنے احکامات پر پوری طرح عملدرآمد کرائیں۔ اجلاس سے لاہور چیمبر کے سینئر نائب صدر امجد علی جاوا، نائب صدر محمد ناصر حمید خان ،میاں انجم نثار، ظفر اقبال چودھری، سہیل لاشاری، آفتاب احمد وہرہ، طاہر جاوید ملک دیگر چیمبرز اور صنعتی و تجارتی ایسوسی ایشنز کے نمائندوں نے بھی خطاب کیا ۔ اجلاس کے شرکاء نے کہا کہ سینٹ کی سٹینڈنگ کمیٹی برائے فنانس چیئرمین ایف بی آر کی اجازت کے بغیر چھاپے نہ مارنے کے احکامات دے چکی ہے جبکہ چیئرمین ایف بی آر نے لاہور چیمبر کے دورہ کے موقع پر چھاپے نہ مارنے کا واضح اعلان کیا تھا لیکن ان کے احکامات پر عملدرآمد نہیں ہو رہا، نئے ٹیکس دہندگان تلاش کرنے کے بجائے موجودہ ٹیکس دہندگان کو تنگ کیا جارہا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ 2012-13ء سے لیکر 2015-16ء کے دوران محصولات کی وصولیوں میں تقریبا 60 فیصد اضافہ ہوا لیکن اس عرصہ میں ٹیکس فائلر ز کی تعداد14 لاکھ سے کم ہوکر صرف 9 لاکھ رہ گئی جو اس بات کا ثبوت ہے کہ ایف بی آر عملے کے صوابدیدی اختیارات کی وجہ سے پرانے ٹیکس دہندگان ٹیکس نیٹ سے باہر ہوتے جارہے ہیں اور تمام بوجھ موجودہ ٹیکس گزاروں پر منتقل ہورہا ہے۔ اجلاس کے شرکاء نے مطالبہ کیا کہ وزارت خزانہ ایف بی آر عملے کی جانب سے تاجروں کو پریشان کرنے کے معاملے کا نوٹس لیتے ہوئے ایف بی آر حکام کو کاروباری مقامات پر چھاپے نہ مارنے کی ہدایت کریں۔اجلاس میں میاں نعمان کبیر، سید محمود غزنوی، کاشف انور، شفقت سعید پراچہ، ذیشان خلیل، میاں عبدالرزاق، معظم رشید، عدنان خالد بٹ، رضوان اختر شمسی،ابراہیم قریشی، سید مختار علی، زاہد مقصود بٹ، میاں محمد نواز، طاہر منظور چودھری، چودھری خادم حسین، شہزاد اعظم خان، میاں شہریار علی، محمد شہزاد، خواجہ خاور رشید، وقار احمد میاں، ظفر محمودبھی موجود تھے۔