سٹاک ایکسچینج،91ارب سے زائد سرمایہ ڈوب گیا

پاکستان سٹاک ایکسچینج بدھ کے روز کاروباری تیزی کی وجہ سے 48600 پوائنٹس کی سطح کو چھونے کے بعد ایک بار پھر مندی کا شکار ہو گئی اور 100 انڈیکس 48 ہزار پوائنٹس سے گر کر 47600 پوائنٹس کی پست سطح پر بند ہوا ، مندی کے سبب مارکیٹ میں سرمایہ کاروں کے 91 ارب سے زائد روپے ڈوب گئے جس سے سرمائے کا مجموعی حجم 95 کھرب روپے سے گھٹ کر 94 کھرب روپے پر آگیا ۔ماہرین کے مطابق وزیراعظم نواز شریف کی جے آئی ٹی میں طلبی نے مارکیٹ کو ہلا کے رکھ دیا ہے جبکہ حالیہ دنوں میں پاکستان سٹاک ایکسچینج میں سرگرمیاں 4 فیصد کم ہوگئیں ۔ کاروبار کے اختتام پر کے ایس ای 100 انڈیکس میں 462.40 پوائنٹس کی کمی ریکارڈ کی گئی جس سے کے ایس ای 100 انڈیکس 48071.04 پوائنٹس سے کم ہو کر 47608.64 پوائنٹس پر آ گیا ، اسی طرح 264.87 پوائنٹس کی کمی سے کے ایس ای 30 انڈیکس 24805.58 پوائنٹس اور کے ایس ای آل شیئرز انڈیکس 286 پوائنٹس کمی سے 33409.51 پوائنٹس سے کم ہو کر 33122.61 پوائنٹس پر بند ہوا ۔مندی کے سبب مارکیٹ کے سرمائے میں 91 ارب 54 کروڑ 21 لاکھ 53 ہزار 331 روپے کی کمی واقع ہوئی جس کے نتیجے میں سرمائے کا مجموعی حجم 95 کھرب 80 ارب 91 کروڑ 77 لاکھ 79 ہزار 93 روپے سے گھٹ کر 94 کھرب 89 ارب 37 کروڑ 56 لاکھ 25 ہزار 762 روپے رہ گیا ۔ بدھ کو مارکیٹ میں 25 کروڑ 55 لاکھ 43 ہزار حصص کے سودے ہوئے اور ٹریڈنگ ویلیو 10 ارب روپے تک محدود رہی جبکہ منگل کو مارکیٹ میں 31 کروڑ 71 لاکھ 76 ہزار حصص کے سودے ہوئے تھے اور ٹریڈنگ ویلیو 14 ارب روپے ریکارڈ کی گئی تھی ۔