نئی فصل میں تاخیر کے باعث روئی کی قیمتیں 7 ہزار روپے من تک پہنچ گئیں

پنجاب میں ہونے والی غیر متوقع بارشوں کے باعث کپاس کی نئی فصل کی آمد میں 3سے 4ہفتوں کی متوقع تاخیر اور ڈالر کے مقابلے میں بھارتی روپے کی قدر میں اضافے کے باعث بھارتی کاٹن ایکسپورٹس رجحان میں کمی سامنے آنے سے گزشتہ ہفتے کے دوران پاکستان میں روئی کی قیمتوں میں زبردست تیزی جبکہ امریکی کاٹن ایکسپورٹ رپورٹس مثبت نہ آنے اور دنیا بھر میں 2014-15 کے دوران کپاس کی پیداوار میں اضافے ،کھپت میں کمی اور اینڈنگ اسٹاکس زیادہ ہونے بارے رپورٹس جاری ہونے کے باعث گزشتہ ہفتے کے دوران دنیا بھر میں روئی کی قیمتوں میں زبردست مندی کا رجحان دیکھا گیا۔ممبر پاکستان کاٹن جنرز ایسوسی ایشن (پی سی جی اے ) احسان الحق نے ایکسپریس  کو بتایا کہ گزشتہ دو ہفتوں کے دوران پنجاب کے کاٹن زونز بہاولنگر ،بہاولپور ،ملتان ،ساہیوال ،پاک پتن،فیصل آباد اور خانیوال میں غیر متوقع بارشوں کے باعث کپاس کی کاشت میں تاخیر اور پہلے سے کاشت کی گئی کپاس کی فصل کو نقصان پہنچنے کے باعث کپاس کی نئی فصل میں تقریبا 4ہفتوں کی تاخیر متوقع ہے جبکہ قبل ازیں فروری /مارچ کے مہینوں میں درجہ حرارت روایت سے کم ہونے کے باعث ان مہینوں کے دوران ان کاٹن زونز میں کپاس کی کاشت بھی کم ہوئی تھی جبکہ رواں ہفتے کے دوران سندھ کے کاٹن زونز میں بھی بارشیں ہونے کی پیشگوئی کی گئی ہے جس کے صحیح ہونے کی صورت میں رواں ہفتے کے دوران پاکستان میں روئی کی قیمتوں میں مزید تیزی کا رجحان سامنے آ سکتا ہے۔