بارشوں کے باعث کپاس کی پیداوار میں غیرمعمولی کمی کا خطرہ

رواں سال فروری اورمارچ کے مہینوں میں درجہ حرارت غیر معمولی طور پرکم ہونے اور اب پنجاب کے کاٹن زونزمیں ہونے والی بارشوں کے باعث رواں سال پاکستان میں کپاس کی مجموعی پیداوار میں غیر معمولی کمی کا خدشہ پیدا ہوگیا ہے جبکہ کاٹن زونز میں مزید بارشوں کی صورت میں روئی کی درآمدی سرگرمیوں میں بھی غیرمعمولی اضافے کے خطرات پیدا ہوگئے ہیں۔ممبر پاکستان کاٹن جنرز ایسوسی ایشن (پی سی جی اے) احسان الحق نے بتایا کہ گزشتہ چند سالوں کے دوران سندھ کے ساتھ ساتھ پنجاب کے بیشتر کاٹن زونز میں بھی فروری/ مارچ کے دوران کپاس کی کاشت کے رجحان میں خاطر خواہ اضافہ سامنے آیا تھا جس کے باعث پنجاب اور سندھ میں نیا کاٹن جیننگ سیزن بھی جون میں شروع ہونے سے روئی کی درآمدات میں کافی کمی واقع ہوگئی تھی تاہم رواں سال فروری مارچ میں درجہ حرات میں غیر متوقع، غیر معمولی کمی کے باعث پنجاب کے اضلاع ساہیوال، رحیم یارخان، بہاولپور، بہاولنگر، پاک پتن، وہاڑی اور خانیوال میں کپاس کی کاشت میں کافی کمی واقع ہوئی تھی۔