چائے کی اسمگلنگ سے پاکستان کو 260 کروڑ روپے خسارہ

رواں سال چار ماہ کے دوران افغان ٹرانزٹ ٹریڈ کی آڑ میں چائے کی مختلف اقسام کی اسمگلنگ سے پاکستان کو دو ارب ساٹھ کروڑ روپے خسارے ہوا۔ ذرائع کے مطابق اسمگلنگ پر قابو پانے کے لیے حکومت کی ناقص پالیسی کے باعث اسمگل شدہ چائے مارکیٹ میں باآسانی پہنچ جاتی ہے، جس سے درآمدات متاثر ہوتی ہیں، رواں سال جنوری سے اپریل کے دوران اے ٹی ٹی کی آڑ میں سات کروڑ بیس لاکھ ڈالر مالیت کی دو کروڑ چالیس لاکھ کلو گرام چائے اسمگل ہو کر پاکستان پہنچی۔ اسی طرح سال دوہزار تیرہ میں تیس کروڑ ڈالر کی چائے اسمگل ہوئی، جس سے قومی خزانے کو دس ارب روپے خسارہ ہوا۔