پاکستان کو ادائیگیوں کے توازن میں 2 ارب ڈالرسے زائد خسارہ

رواں مالی سال دس ماہ کے دوران ادائیگیوں کے توازن میں پاکستان کو دو ارب ڈالر سے زائد خسارہ ہوا، درآمدات میں اضافے سے خسارہ انسٹھ کروڑ ڈالر بڑھ گیا۔ اسٹیٹ بینک کے مطابق جاری کھاتوں کا خسارہ دو ارب سولہ کروڑ ڈالر رہا، گزشتہ سال یہ ایک ارب ستاون کروڑ ڈالر تھا، جس میں رواں سال سینتیس فیصد اضافہ ہوا، خدمات اور تجارتی خساروں میں اضافہ کرنٹ اکاونٹ خسارہ بڑھنے کے اہم اسباب ہیں، ساتھ ہی بیرونی انفلو میں سست روی خصوصا کولیشن سپورٹ فنڈ کی بروقت وصولی نہ ہونے سے بھی تواازن ادائیگی کے خسارے میں اضافہ ہوا، تاہم توقع ہے کہ مستقبل قریب میں بیرونی سرمائے کی آمدورفت اور تھری جی فور جی لائنسنس کی نیلامی کی رقم کی وصولی سے ادائیگیوں کا توازن بہتر بنانے میں مدد ملے گی۔