مقامی کاٹن مارکیٹ میں روئی کے بھائو میں مجموعی طور پر استحکام رہا

مقامی کاٹن مارکیٹ میں گزشتہ ہفتہ کے دوران ٹیکسٹائل واسپنگ ملز کی جانب سے روئی کی محدود خریداری دیکھی گئی جبکہ کپاس کی قلیل مقدار دستیاب ہونے کے باعث روئی کے بھائو میں مجموعی طور پر استحکام رہا' کراچی کاٹن ایسوسی ایشن کی اسپاٹ ریٹ کمیٹی نے اسپاٹ ریٹ میں 100 روپے کا اضافہ کرکے اسپاٹ ریٹ فی من 6900 روپے کے بھائو پر بند کیا۔ صوبہ سندھ میں روئی کا بھائو فی من 5600تا 6750روپے ،صوبہ پنجاب میں فی من 6500تا 7000روپے رہا۔ کراچی کاٹن بروکرز فورم کے چیئرمین نسیم عثمان نے بتایا کہ دنیا کے کپاس پیدا کرنے والے تمام ممالک میں روئی کے بھائو میں مندی کا رجحان ہے لیکن پاکستان میں روئی کا اسٹاک کم ہونے کی وجہ سے اس کے بھائو میں استحکام پایا جارہا ہے۔ دوسری جانب کاٹن یارن کی مانگ اور بھائو میں سرد بازاری کا رجحان برقرار رہے جس کے سبب مارکیٹوں میں مالی بحران پیدا ہورہا ہے۔ نسیم عثمان کے مطابق فی الحال جینرز کے پاس روئی کی تقریباً 2 لاکھ گانٹھوں کا اسٹاک موجود ہے جن میں معیاری کپاس کم ہے۔ دریں اثناء صوبہ سندھ اور پنجاب کے کپاس پیدا ہونے والے علاقوں سے ملنے والی اطلاعات کے مطابق کپاس کی فصل میں گزشتہ سال کے نسبت تاخیر ہونے کا اندیشہ ہے حکومت نے نئی فصل 2014-15 کی پیداوار کا ہدف ایک کروڑ 51 لاکھ گانٹھوں کا مقرر کیا ہے۔