Get Adobe Flash player

چین نے بھی پٹرول اور ڈیزل کاروں پر پابندی کا اعلان کر دیا

فرانس اور جرمنی کے بعد چین نے بھی پٹرول اور ڈیزل کاروں پر پابندی کا اعلان کردیا ہے تاہم اس حوالے سے تاریخ کا تعین نہیں کیا نائب وزیر صنعت وانفارمیشن ٹیکنالوجی زن گیوبن نے شمالی شہر تیان جن میں فورم سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ وزارت نے متعلہ تحقیق پر کام شروع کردیا ہے اور اس حوالے سے تاریخ کے تعین پر بھی کام کیا جا رہا ہے۔ ان اقدامات کے ذریعے ماحول میں گہری تبدیلیاں آئیں گی اور چین کی آٹو صنعت کی ترقی کو بھی سپورٹ ملے گی، اداروں کو روایتی کاروں میں توانائی کی بچت کی سطح کو بہتر بنانے کے لیے محنت کرنی چاہیے اور تشخیص کردہ ضروریات کے مطابق نیوانرجی وہیکلز کو تیزی سے تیار کیا جانا چاہیے۔اگرچہ نائب وزیرصنعت نے مذکورہ کاروں پر پابندی کے حوالے سے کوئی ڈیڈلائن نہیں دی تاہم چینی آٹو سیکٹر کی نمائندہ نیشنل پسنجر کار ایسوسی ایشن کے سربراہ کیوئی ڈونگ شو نے کہاکہ یہ طویل عمل ہے۔ روایتی فیول سے چلنے والی گاڑیوں کی پیداوار روکنا آئندہ یا دو دہائیوں میں بھی مشکل ہوگا، پسنجر کاروں کے حوالے سے ہم 2040 تک نمایاں پیشرفت کر سکتے ہیں مگر ہیوی ڈیوٹی ٹرک جیسی دیگر مصنوعات کے لیے یہ بہت مشکل کام ہوگا، آٹو میکرز نے اس شعبے میں زیادہ کام نہیں کیا اور صارفین بھی نئی توانائی کی گاڑیوں سے زیادہ واقفیت نہیں رکھتے۔