Get Adobe Flash player

راولپنڈی،کالج روڈ پر ریسٹورنٹ کی پارکنگ میں دھماکہ،15افرادزخمی

تھانہ سٹی کے علاقے کالج روڈ پر واقع سیور فوڈکی پارکنگ میں کھڑے موٹر سائیکل میں نصب بم دھماکہ ،6سالہ بچی سمیت 12افرادزخمی ، چا ر کی حالت تشویشناک ، تفصیلات کے مطابق گزشتہ رات 9بجکر 50منٹ پر سیور فوڈ کی پارکنگ میں موجود موٹر سائیکل میں نصب دھماکہ خیز مواد کے پھٹنے سے6سالہ بچی رائمہ سمیت سیور فوڈ کے ملازمین اکرم (ویٹر) اور اختر( سیکورٹی گارڈ)ملحقہ دوکان کا مالک ریاست اور سیور فوڈ پر آنے والے صابر ، حمید عباسی ، ساجد ، غنی گل ، حامد، بلال ، اسرار ، مشتاق ، اشعر زخمی ہوگئے ، جن میں چار کی حالت تشویشناک بیان کی جاتی ہے، دھماکہ پارکنگ میں کھڑے موٹر سائیکل میں نصب بارودی مواد کے پھٹنے سے ہوا، جس کی شدت سے سیور فوڈ اور ملحقہ دوکانوں کے شیشے ٹوٹ گئے ،دھماکہ کی آواز دور تک سنی گئی ، واقع کے فوری بعد پولیس کی بھاری نفری نے علاقے کو گھیرے میں لے لیا اور جائے وقوعہ کی طرف جانیوالے تمام راستے سیل کر دئیے تاہم جائے وقوعہ پر لوگوں کی بڑی تعداد جمع ہو گئی، دھماکہ کی اطلاع ملنے پرامدادی کارکن جائے وقوعہ پر پہنچ گئے ، اور زخمیوں کو سول ہسپتال راولپنڈی منتقل کر دیا گیا ، ہسپتال ذرائع کے مطابق زخمیوں میں شامل ساجد ، اختر ، اشعر ، اکرم اور چھ سالہ رائمہ سمیت دیگر افرادبارودی مواد کے ساتھ موجود چھر ے اور شیشے کے ٹکرے لگنے سے زخمی ہوئے ہیں ، اطلاع ملنے پر سی پی او راولپنڈی ہمایوں بشیر تارڑ ،دیگر پولیس افسران  بھی جائے وقوعہ پر پہنچ گئے اور دھماکہ کی جگہ کا معائنہ کیا ، سی پی او راولپنڈی نے میڈیا سے گفتگو کے دوران کہا کہ جائے وقوعہ سے شواہد اکٹھے کر لیے گئے ہیں اور واقعہ کی مکمل تفتیش شروع کر دی گئیجبکہ ذرائع سے یہ بھی معلوم ہوا ہے کہ پچھلے تقریباً ایک سال سے سیور فوڈ کے مالکان حاجی نعیم کو میرانشاہ سے موبائل فون کے ذریعے بھتہ طلب کیا جار ہا تھا اور بھتہ نہ دینے کی صورت میں سنگین نتائج کی دھمکیاں بھی دی گئی ہے جبکہ کچھ ماہ سے انتظامیہ کو بھتہ کی پرچیاں بھی موصول ہو رہی تھی جس کے بارے میں پولیس کو آگاہ کر دیا گیا تھا جبکہ پولیس نے اس ضمن میں کوئی کارروائی عمل میں نہ لائی ۔ ذرائع نے یہ بھی بتایا کہ تقربیاً ڈیڑھ ماہ قبل سیور فوڈ کے مالک کے گھر جو ڈی ایچ اے میں واقع ہے دستہ بم حملہ بھی کیا گیا تھا جس میں کوئی جانی نقصان نہیں ہوااور چند روز قبل سیور فوڈ پر نامعلوم افراد کی طرف سے فائرنگ بھی کی گئی تھی جس میں سیور فوڈ پر کام کرنے والے ملازم کے گردن میں گولی لگی تھی۔ سیور فوڈ کے ملازمین کے مطابق مالکان کو بھتے کی پرچیاں وصول ہونے کی مقامی انتظامیہ کو اطلاع دی گئی تھی ، لیکن پولیس نے کسی قسم کی کوئی کارروائی نہ کی ۔