لاہورہائیکورٹ راولپنڈی بنچ نے بلک واٹر سپلائی فراہمی کیس نمٹادیا

لاہور ہائی کورٹ راولپنڈی بنچ کے جج جسٹس مامون الرشید شیخ نے بلک واٹر سپلائی دریائے جہلم سے مری وکوٹلی ستیاں فراہمی کیس نمٹا دیا، عدالت عالیہ میں جاوید اقبال ستی سابقہ امیدوار ایم این اے حلقہ این اے 50، یعقوب، افتخار ستی، مشتاق عباسی وغیرہ نے عوامی مفاد میں رٹ دائر کرتے ہوئے موقف اختیار کیا تھا کہ دریائے جہلم سے جدید ٹیکنالوجی کے ذریعے پانی پمپ کرکے مری وکوٹلی ستیاں کی عوام جو عرصہ دراز سے گندہ وآلودہ پانی پی رہے ہیں جس سے 40% بچے مختلف بیماریوں کا شکار ہوچکے ہیں کو صاف وشفاف پانی کی فراہمی کا منصوبہ جس کو سال 2005ء میں اس وقت کی حکومت نے ٹھیکہ سیمن کمپنی کو دیتے ہوئے اس کمپنی کو 180ملین روپے کی خطیر رقم بھی ادا کردی تھی اور کام تقریباً 80%سے زیادہ مکمل ہوچکا ہے لیکن اس پر اب توجہ نہیں دی جا رہی، فاضل عدالت نے فیصلہ محفوظ کرلیا تھا،چیف سیکرٹری پنجاب نے لیٹر نمبر SO(PH)V-19-85 جاری کیا جس کے تحت ناصر ٹھیکیدار کو بقایا رقم ادا کی گئی بلکہ منصوبہ جلد ازجلد مکمل کرنے کا حکم دیا، مذکورہ لیٹر ایڈووکیٹ جنرل نے پنجاب حکومت کی طرف سے عدالت میں پیش کیا اور فاضل عدالت کو یقین دہانی کرائی کہ مذکورہ واٹر سپلائی منصوبہ سال 2005ء کے معاہدہ کے عین مطابق عملدرآمد یقینی بنایا جائیگا۔