Get Adobe Flash player

پاکستان بھارتی ریاستی دہشت گردی کا شکار ہے، ترجمان دفتر خارجہ

ترجمان دفتر خارجہ کا کہنا ہے کہ پاکستان پر بھارتی بے بنیاد الزامات دہشتگردی سے رنگے ہاتھ چھپانے کی کوشش ہے جب کہ پاکستان خود بھارتی ریاستی دہشت گردی کا شکار ہے۔ہفتے وار بریفنگ میں ترجمان دفتر خارجہ نفیس زکریا نے افغانستان میں دہشت گرد حملوں میں قیمتی جانوں کے ضیاع پر افسوس اور دہشت گرد حملوں کی مذمت کرتے ہوئے کہا ہم افغانستان میں امن و استحکام چاہتے ہیں اور وہاں امن لانے کے ہر عمل میں شریک رہے۔ ان کا کہنا تھا کہ دہشت گردی، دہشت گردی ہے اور ہر قسم کی دہشت گردی جہاں بھی ہوں پرزور مذمت کرتے ہیں، معصوم انسانی جانوں کو نشانہ بنانا انتہائی قابل مذمت ہے۔نفیس زکریا کا کہنا تھا کہ پاکستان کے لیے افغانستان کی انتہائی زیادہ اہمیت ہے، افغان امن کے لیے ہر قسم اور ہر طرح سے اپنی ذمہ داریاں نبھائیں جب کہ سرحد کے دونوں جانب دہشت گردی کے خلاف مربوط کارروائی اور مکمل امن کے لیے کوشاں ہیں۔ ان کاکہنا تھا کہ افغان سرزمین پر عدم استحکام کے باعث داعش کو جگہ مل رہی ہے اور افغانستان میں داعش کی موجودگی پاکستان کے لیے خطرہ ہے، داعش اور منشیات و انسانی اسمگلنگ کی رو ک تھام کے لیے موثر سرحدی انتظام ضروری ہے، ایسا سرحدی انتظام چاہتے ہیں جہاں عوام، تجارت اور راہداری سہولیات باہم حاصل ہوں۔ترجمان دفتر خارجہ کا کہنا تھا کہ بھارتی قابض فوج نہتے کشمیریوں پر طاقت کا وحشیانہ استعمال کررہی ہے، 8 کشمیریوں کو شہید کیا جاچکا ہے جب کہ بھارت تحریک آزادی کو دہشت گردی قرار دینے کی کوشش کررہا ہے جسے عالمی برادری مسترد کرچکی ہے۔ انہوں نے کہا کہ حریت رہنماوں کی نظر بندی و گرفتاری کی مذمت کرتے ہیں جب کہ کشمیریوں کو مسلسل آٹھویں جمعہ نماز کی ادائیگی سے روکا جارہا ہے۔