بیروزگاری کے بعدعوام سے گھر کی چھت چھیننے کی تیاری کی جا رہی ہے،میاں اسلم

جماعت اسلامی پاکستان کے مر کزی نائب امیر میاں محمد اسلم نے کہا ہے کہ ملک میں گیس ،بجلی اور بے روز گاری کے بعد عوام سے گھر کی چھت چھینے کی تیاری کی جا رہی ہے،جب تک کچی آبادیوں کے مکینوں کو متبادل جگہ اور زند گی کی بنیادی ضروریات فر اہم نہیں کی جا تی ان سے چھت چھیننا انسانی حقوق کی خلاف ورزی ہے ،اسلام آباد کی تعمیر و تر قی میں مسیحی برادری کے کردار کو نظر انداز نہیں کیا جا سکتا ۔ان خیالات کا اظہار انھوں نے جماعت اسلامی اہل کتاب ونگ کے زیر اہتمام منعقدہ ایک تقریب سے خطاب کر تے کیا ۔اس مو قع پرجماعت اسلامی اہل کتاب ونگ کے صدر جمیل کھو کھر،پطرس جو زف ،جمشید بھائی ،طارق مٹو،شفیق نو را،سہیل رو می ،بگھت منور نے بھی خطاب کیا۔میاں محمد اسلم نے کہا ملک میں ہر شخص عدم تحفظ کا شکار ہے متبادل جگہ دیے بغیر آبادیوں کو مسمار کر نے سے بد تر ین رہا ئشی مسائل جنم لیں گے اور اسلام آباد بد ترین انتظامی مسائل سے دو چار ہو جا ئے گا ۔ انھوں نے کہا اسلام آباد کی تعمیر کے وقت بنیا دی نقائص رہ گئے ہیں ملاز مین کے لیے رہائشی سہولتیں نہ ہو نے اور مہنگے مکانات کی وجہ سے جگہ جگہ کچی آباد یاں قائم ہو رہی ہیں۔جمیل کھو کھر نے کہااسلام آباد میں حکمرانوں اور غر یبوں کے در میاں طبقاتی جنگ جاری ہے جس میں باآخر غریبوں کی ہی کا میابی ہو گی ۔انھوں نے کہا سی ڈی اے کا آبادیوں میں آپر یشن کا فیصلہ ایک بھیانک سازش ہے جس کو کسی بھی صورت کامیاب نہیں ہو نے دیا جا ئے گا ۔