Get Adobe Flash player

وفاقی حکومت کی میڈیا سے اپیل درحقیقت میڈیا کی ذمہ داری

 وفاقی حکومت کی طرف سے جاری بیان میں ملک کے بہترین مفاد میں پرنٹ اور الیکٹرانک میڈیا سے درخواست کی گئی ہے کہ وہ دہشت گردی کی ستائش کے رحجان اور دہشت گردوں کے ناپاک عزائم اور خواہشات کی حمایت کرنے والے مواد کی نشر و اشاعت سے گریز کریں بیان میں کہاگیاہے کہ عسکریت پسندی کے خلاف کوششوں اور دہشت گردی کی لعنت سے چھٹکارا پانے کے خلاف شروع کیاگیا آپریشن قوم کے تمام طبقات سے اتحاد ویکجہتی کا تقاضا کرتاہے اور میڈیاکو قوم کے مورال کو بلند رکھنے کے لئے لازمی طور پر اپنا ذمہ دارانہ کردار ادا کرنا چاہیے وفاقی حکومت کی طرف سے اس توقع کااظہار کیاگیاہے کہ ریاست کا چوتھا ستون اور رائے عامہ ہموار کرنے کا موجب میڈیا اس معاملے میں بھی حتی المقدور ذمہ داری کا مظاہرہ اور دہشت گردوں کے نقطہ نظر کی تشہیر سے گریزکرے گا۔ وفاقی حکومت کی میڈیا سے اپیل بے حد بامعنی ہے اس وقت پاک فوج اور قوم مل کر ان کے خلاف جنگ کر رہے ہیں جنھوں نے گزشتہ برسوں کے دوران وطن عزیز کے پچاس ہزار سے زائد شہریوں اور پانچ ہزار سے زائد پاک فوج کے افسروں اور جوانوں کو شہید کیا مساجد عبادت گاہوں اور مزارات کو نقصان پہنچایا اسکولوں کی عمارتیں تباہ کیں اور مجموعی طور پر قومی معیشت کو103 ارب ڈالر کا نقصان پہنچایا دنیا بھر کی یہ مسلمہ رائے ہے کہ دہشت گردی کے خاتمہ کے بغیر کوئی قوم ترقی کرسکتی ہے نہ کوئی ملک استحکام حاصل کر سکتاہے قوم آج اپنی سلامتی اور ترقی کے دشمنوں سے نبردآزما ہے دشمنوں کے نقطہ نظر کا پرچاریقیناً ان کے مذموم مقاصد اور مفادات کے حصول کا باعث بن سکتاہے اس لئے ہم وفاقی حکومت کے اس موقف کی تائید کرتے ہیں کہ جن دہشت گردوں کے خاتمہ کے لئے پاک فوج اور قوم صف آراء ہیں ان کے نقطہ نظر کی تشہیر سے گریز کیاجاناچاہیے تاہم یہ بھی ضروری ہے کہ پاک فوج اور قوم کے مورال کو بلند کرنے کے لئے میڈیا اپنا کردار ادا کرے میڈیا جو ریاست کا چوتھا ستون ہے یقیناً اسے اس حقیقت کا ادراک کرناہے کہ ملک دشمن اور دہشت گرد آج ریاست کے خلاف مختلف انداز سے جارحیت کا ارتکاب کر رہے ہیں ایسے میں چوتھے ستون کی ذمے داری ہے کہ وہ دیگر اداروں کے ساتھ مل کر ریاست کے استحکام کے لئے اپنا کردار ادا کرے اس میں کوئی شک نہیں کہ مجموعی طور پر ہمارا الیکٹرانک اور پرنٹ میڈیا ذمہ دارانہ کردار ادا کر رہاہے تاہم وقت کا تقاضاہے کہ سلامتی کی اس جنگ میں وہ اپنے کردار کو مزید وسعت دے یہی اس سے قوم کا تقاضا بھی ہے۔