قوم نے معاشی بہتری کے لئے حکومت کو پانچ سال کا مینڈیٹ دیا

جمہوریت کے ثمرات سے معاشرے اس وقت ہی مستفید ہوسکتے ہیں جب اسے مستحکم ہونے اور کام کرنے کے مواقع فراہم کئے جائیں کوئی بھی جمہوری حکومت ایک مخصوص مدت کے لئے عوام سے منیڈیٹ لے کر آتی ہے پاکستان کے تناظر میں اس مینڈیٹ کی مدت پانچ سال ہے یہی وجہ ہے کہ ہمارے ہاں منتخب حکومتیں پانچ سال کی منصوبہ بندی کرتی ہیں ان کی یہ کوشش اور خواہش ہوتی ہے کہ اس مدت کے دوران وہ اپنے منشور پر زیادہ سے زیادہ حد تک عمل درآمد کریں پاکستان مسلم لیگ ن کی موجودہ حکومت نے اپنے اقتدار کا بمشکل پہلا برس ہی مکمل کیاہے مگر بعض عناصر نے اس کے خلاف احتجاجی جلسوں اور دھرنوں کی سیاست شروع کر دی ہے اور اعلانیہ یہ دعوے کر رہے ہیں کہ وہ اس حکومت کو ختم کئے بغیر چین سے نہیں بیٹھیں گے جمہوریت میں کسی بھی حکومت کی تبدیلی کا طریقہ کار موجود ہے اور وہ قومی اسمبلی کے ایوان میں تحریک عدم اعتماد کی منظوری ہے اس کے علاوہ اور کوئی طریقہ نہیں ہے پارلیمنٹ سے باہرسڑکوں پر مظاہروں اور دھرنوں سے کوئی بھی جمہوری حکومت تبدیل نہیں کی جاسکتی البتہ یہ امر واضح ہے کہ اس قسم کا انداز سیاست قومی ترقی کے سفر پر منفی اثرات مرتب کرنے کا باعث بن سکتاہے وزیراعظم نوازشریف نے اسلام آباد میں نوجوانوں کے لئے لیپ ٹاپ اسکیم کی افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے اسی موضوع پر اظہار خیال کیاہے انہوں نے دو ٹوک انداز میں کہا کہ ہم کام کرنے آئے ہیں ہماری ٹانگیں نہ کھینچی جائیں اور ہمیں کام کرنے دیاجائے ہمیں پانچ سال تک کام کرنے اور پاکستان کو آگے بڑھانے کا موقع دیاجائے ان کا کہناتھا کہ پاکستان نے65 برسوں میں بہت دکھ اٹھائے ہیں ہم ان دکھوں کو ختم کرنے آئے ہیں اور یقیناً یہ مقصد حاصل کر کے دم لیں گے وزیراعظم نے کہا کہ ہم نے پچھلے سال بڑی بردباری سے گزارے ہیں اور صبر کا مظاہرہ کیاہے اس دوران ہم نے دھرنے دیئے نہ ہی سڑکوں پر آئے لیکن اب ایک پارٹی احتجاج دوسری دھرنے اور تیسری نظام لپیٹنے اور تباہی کی بات کرتی ہے انہوں نے استفسار کیا کہ یہ سب کس لئے کیاجارہاہے کیا حکومت جو کچھ کر رہی ہے وہ درست نہیں ہے حکومت کی جانب سے نوجوانوں کو تعلیم سے آراستہ کرنے کے لئے غریب بچوں کی فیس ادا کی جارہی ہے انہوں نے کہا کہ ہماری حکومت نے نوجوانوں کے لئے خصوصی پروگرام تیار کئے ہیں یوتھ پروگرام کے تحت چھ اسکیمیں ہماری کمٹنٹ کا مظہر ہیں ہم نے بزنس لون اسکیم کے تحت بارہ ہزار نوجوانوں کو قرضہ دیاہے ان لوگوں نے اپنا کاروبار شروع کر دیاہے بلکہ قرضہ کی واپس ادائیگی بھی شروع کر دی ہے اسی طرح فیس واپس کرنے کی سکیم سے سالانہ چالیس ہزارطلباء کو فائدہ ہوگا یہ امر قابل ذکر ہے کہ وزیراعظم نے جس لیپ ٹاپ اسکیم کا افتتاح کیا اس کے تحت ہائی ایجوکیشن کمیشن کی تسلیم شدہ جامعات کے طلباء میں ایک لاکھ لیپ ٹاپ تقسیم کئے جائیں گے وزیراعظم نے کہا کہ جو لوگ دھرنے اور احتجاج کر رہے ہیں ان کا ایجنڈا سمجھنے سے قاصر ہوں مجھے سمجھ نہیں آتا کیا وہ ہماری ترقی کے ایجنڈے کے خلاف احتجاج کررہے ہیں وہ کونسا انقلاب لانا چاہتے ہیں ملک کو پرامن بنانے اور رہنے کے لائق پرامن جگہ بنانے کے لئے ہم ایک بل لارہے ہیں جس کے تحت ملک کو غیر قانونی اسلحہ سے پاک کیا جائے لیکن اس کے لئے ہمیں تمام پارلیمانی جماعتوں کی معاونت درکار ہے وزیراعظم نے کہا کہ خنجراب سے گوادر تک اقتصادی راہداری تعمیر ہونے سے ملک میں معاشی انقلاب آئے گا لاہور سے کراچی تک موٹروے تعمیر کی جائے گی ہم نے بجلی کی لوڈشیڈنگ کے خاتمہ کے لئے بجلی کے بہت سے منصوبے شروع کئے ہیں بے روزگاری کے خاتمہ کے لئے متعدد اقدامات کئے ہیں ہمارا مقصد یہ ہے کہ پاکستان کو ایک ترقی یافتہ اور خوشحال ملک بنایاجائے۔یہ ریکارڈ کی بات ہے کہ موجودہ حکومت نے ایک سال کے دوران ملک کی اقتصادیات کو تباہی سے نکال کر امید کے دائرے میں داخل کرایاہے ڈالر کے مقابلے میں روپے کو استحکام ملاہے اور ملک کے اندر غیر ملکی سرمایہ کاری میں اضافہ ہواہے تھری جی اور تھری فور کی کامیاب بنیادی اور عالمی مارکیٹ میں یورو بانڈ کی فروخت عالمی سرمایہ کاروں کی قومی اقتصادیات پر اطمینان کا مظہر ہے توانائی کے بحران کو حل کرنے کی حکومتی کوششیں بھی اطمینان بخش ہیں اس تناظر میں یہی محسوس ہوتاہے کہ سیاسی عدم استحکام پیدا کرنے کے خواہاں عناصر موجودہ حکومت کی کامیابیوں کو سبوتاژ کرنے اور قومی ترقی کے راستے میں رکاوٹیں ڈالنے کے خواہاں ہیں حکومت کو ترقی کے سفر کو تیر تر کرتے ہوئے ان عناصر سے موثر سیاسی حکمت عملی کے ساتھ نمٹنا ہوگاپوری قوم بلاشبہ ترقی کے اس سفر میں حکومت کی ہم رکاب ہے۔