Get Adobe Flash player

خیبرپختونخواہ اسمبلی کے اسپیکر کے اثاثے ڈائریکٹر نیب کے انکشافات

ڈائریکٹر نیب خیبرپختونخواہ کی طرف سے چیئرمین نیب کو خیبرپختونخواہ اسمبلی کے اسپیکر اسد قیصر کے خلاف تحقیقات کی اجازت  کے لئے خط لکھا گیا ہے اور یہ کہا گیا ہے کہ انہوں نے مختصر مدت میں غیر معمولی اثاثے بنائے ہیں اور اپنے اختیارات کا ناجائز استعمال کیا ہے خط میں کہا گیا ہے کہ اسد قیصر کے پاس اقتدار میں آنے سے پہلے چار بھائیوں کے ساتھ 14مرلے کا گھر تھا اور اب ان کے پاس 5کروڑ مالیت کا 5کنال کا بنگلہ ہے اسد قیصر نے بنی گالہ میں 35کنال اراضی پر 35کروڑ کا گھر بنایا ہے جو ان کی آمدنی کے ذرائع سے کہیں زیادہ ہے اسد قیصر پر مختلف تعمیراتی منصوبوں پر کمیشن لینے' غیر قانونی بھرتیوں اور سکولوں کے نتائج پر اثر انداز ہونے کے بھی الزامات ہیں انہوں نے صوبائی اسمبلی میں 55افراد کو غیر قانونی طریقے سے بھرتی کیا ہے۔ خط میں کہا گیا ہے کہ اسد قیصر کے اثاثوں کی تفصیل اور ذرائع آمدن  میں واضح فرق ہے اس لئے تحقیقات کی اجازت دی جائے ادھر نجی ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے اسد قیصر  نے کہا ہے کہ وہ اپنے خلاف تحقیقات کو خوش آمدید کہیں گے انہوں نے دعویٰ کیا کہ بنی گالہ میں زمین اسپیکر بننے سے قبل 2012 میں خریدی تھی اور بھرتیوں میں بھی تمام قانونی تقاضے پورے کئے گئے۔خیبرپختونخواہ کے ڈائریکٹر نیب کے چیئرمین نیب کو لکھے جانے والے خط کے مندرجات یہ ظاہر کرتے ہیں کہ اسپیکر اسد قیصر کے جو اثاثے منظر عام پر آئے ہیں وہ ان کے ذرائع آمدنی سے مطابقت نہیں رکھتے۔ اس پر چیئرمین نیب یقینا تحقیقات کا حکم دیں گے تاہم سب کچھ میڈیا کے ذریعے منظر عام پر آنے کے بعد کیا صوبے میں قائم احتساب کمیشن کی ذمہ داری نہیں کہ وہ بھی تحقیقات کا آغاز کرے' اس صورتحال سے تو یہی محسوس ہوتا ہے کہ صوبے میں احتساب کا نظام موجود ہے نہ اس کا کسی کو خوف ہے' ساڑھے تین برسو ں کے دوران خیبرپختونخواہ اسمبلی  کے اسپیکر کے اثاثوں میں ہونے والی وسعت حیران کن ہے تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان جو ایک مرحلے پر یہ مطالبہ کرتے رہے کہ پانامہ لیکس کی غیر جانبدارانہ تحقیقات کے لئے وزیراعظم مستعفیٰ ہو جائیں کیا اپنے صوبے کی اسمبلی کے اسپیکر کے خلاف تحقیقات کا آغاز کریں گے اور تحقیقات سے قبل انہیں مستعفیٰ ہونے کے لئے کہیں گے؟ اگر اسمبلی کے اسپیکر مال و زر سمیٹنے کے لئے اس دیدہ دلیری کے ساتھ آگے بڑھتے رہے ہیں تو کابینہ کے دیگر افراد کے جوش و خروش کا کیا عالم ہوگا اس کا بخوبی اندازہ کیا جاسکتا ہے تحریک انصاف کے چیئرمین جو کرپشن کے خاتمے کے خواہاں ہیں اپنے گھر کی طرف بھی نظر کریں۔