Get Adobe Flash player

اقوام متحدہ کی طرف سے علاقائی خوشحالی کے چینی منصوبوں کی توثیق

سلامتی کونسل میں چین کی قرارداد کی منظوری نہ صرف چین کی تاریخ ساز کامیابی ہے بلکہ یہ خطے کے تمام ممالک کی کامیابی ہے جو معاشی بہتری کے لئے اقدامات کر رہے ہیں اور اپنے عوام کو خوشحال دیکھنے کے خواہاں ہیں اس قرارداد کے تحت افغانستان میں اقوام متحدہ کے مسن کے مینڈیٹ میں ایک سال کی توسیع کی گئی ہے جبکہ بھارتی اعتراضات کو مسترد کرتے ہوئے مذکورہ قرارداد کے ذریعے چین کے ون بیلٹ ون روڈ پروجیکٹ کی بھی توثیق کی گئی جس میں آزادکشمیر بھی شامل ہے ون بیلٹ ون روڈ پروجیکٹ کی توثیق نے بھارت کی تشویش میں اضافہ کر دیا ہے ۔ قرارداد میں ون بیلٹ ون روڈ اور دیگر علاقائی ترقیاتی منصوبوں پر عملدرآمد کی کوششیں مزید تیز کرنے پر زور دیا گیا ہے سلامتی کونسل نے افغانستان میں یو این مشن میں ایک سالہ توسیع کی منظوری دی۔ قرارداد کے متن کے مطابق یو این مشن کے تحت افغانستان میں امن اور مفاہمت کے فروغ افغان حکومت کی امداد' انسانی حقوق کی نگرانی اور فروغ' شہریوں کے تحفظ اور بہتر طرز حکومت پر توجہ دی جائے گی قرارداد میں علاقائی معاشی تعاون' علاقائی روابط' تجارت ' سلک روڈ اکنامک بیلٹ' شاہراہ ریشم اور علاقائی ترقی کے منصوبوں کی توثیق کی گئی چائنہ ریڈیو کے مطابق قرارداد کی منظوری کے بعد اقوام متحسدہ میں چین کے مستقل مندوب نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ رواں سال چینی صدر شی جن پنگ نے اقوام متحدہ کے ہیڈ کوارٹرز میں خطاب کرتے ہوئے انسانی برادری کی تعمیر کے تصور کا فارمولا پیش کیا اس بار منظور کردہ قرارداد میں پہلی بار عالمی سطح پر چین کے اس تصور کی توثیق کی گئی ہے اس سے ظاہر ہوتا ہے کہ چین کے تصور نے عالمی انتظامیہ کو متاثر کیا ہے اس کے ساتھ ساتھ قرارداد وی بیلٹ اینڈ روڈ کی تعمیر پر بھی زور دیاگیا ہے اور اس کی تعمیر میں سلامتی کی ضمانت سیمت تفصیلی مطالبہ پیش کئے گئے ہیں اس سے بیجنگ میں منعقدہ وی بیلٹ اینڈ روڈ کے عالمی تعاون کی سمت کے لئے سازگار ماحول پیدا ہوگا چین کو امید ہے کہ اقوام متحدہ کے رکن ممالک قرارداد کے مطابق وی بیلٹ اینڈ روڈ منصوبے کی تعمیر میں مثبت طور پر شامل ہوں گے اور انسانی برادری کی مشترکہ تعمیر کریں گے۔اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل میں چین کے ون بیلٹ ون روڈ پروجیکٹ کی توثیق چین کی بہت بڑی سفارتی کامیابی ہے قرارداد کے ذریعے چین نے عالمی برادری پر یہ ثابت کیا ہے کہ اس کا یہ منصوبہ علاقہ کے عوام کی ترقی' خوشحالی اور ان کے باہمی رابطوں کے لئے کلیدی حیثیت رکھتا ہے سلامتی کونسل کی توثیق کا مطلب یہی ہے کہ اس نے اس منصوبے کی حمایت کی ہے اور یہ تسلیم کیا ہے کہ انسانوں کی ترقی کے لئے اس پر عملدرآمد کو تیز کیا جائے چین اور پاکستان دونوں کے لئے یہ بات بے حد اہمیت رکھتی ہے کہ سلامتی کونسل کی طرف سے  مذکورہ قرارداد کی منظوری کے بعد آزادکشمیر کو سی پیک میں شامل کرنے کے حوالے سے بھارت کے اعتراضات بھی بے معانی ہو کر رہ گئے ہیں اور ان کا وجود نہیں رہا ۔ اگرچہ اس کے اعتراضات کی یوں بھی کوئی حیثیت نہ تھی لیکن سلامتی کونسل کی قرارداد کے بعد اب وہ اس معاملے میں سیاست کرنے کی پوزیشن میں بھی نہیں رہا لیکن اس سے بھی بڑی کامیابی یہ ہے کہ اب بھارت کو سی پیک کے خلاف تخریب کاری کے عزائم ختم کرنے ہوں گے سلامتی کونسل نے وہ بیلٹ ون روڈ کے جس منصوبے کی توثیق کی ہے اس کے تحت ہی سی پیک کے منصوبے شروع کئے جارہے ہیں دوسرے لفظوں میں سی پیک کو بھی اقوام متحدہ کی تائید اور توثیق حاصل ہوچکی ہے اس تناظر میں چین کی حکومت کی یہ امید حقیقت پسندانہ ہے کہ اقوام متحدہ کے ممبر ممالک اس منصونے کی تعمیر میں شامل ہوں گے۔ یہ امر  قابل ذکر ہے کہ خطے کے متعدد ممالک نے سی پیک میں شمولیت کی خواہش ظاہر کی ہے جبکہ چین نے خود بھارت کو اس میں شامل ہونے کی پیشکش کی ہے مذکورہ قرارداد کے باعث بھارتی اعتراضات مسترد کر دئیے گئے ہیں اب اس کے پاس یہی آپشن بچا ہے کہ وہ اس منصوبے میں شامل ہو کر علاقے کے عوام کی ترقی اور خوشحالی کے لئے اپنا کردار ادا کرے مجموعی طور پر دیکھا جائے تو سلامتی کونسل کی قرارداد نے خطے میں انسانی ترقی اور بہتری کے عمل میں چین کے کردار کو تحسین کی نگاہ سے دیکھا ہے اور اس کردار کو مزید تیز تر کرنے کی خواہش ظاہر کی ہے جبکہ یہ خطے کی سلامتی اور اس کے امن کو مستحکم کرنے کی ایک موثر کوشش بھی قرار دی جاسکتی ہے۔