Get Adobe Flash player

کل بھوشن یادیو دہشت گرد ہے عام شہری نہیں

پاکستان نے بھارت کے اس مطالبے کو مسترد کر دیا ہے جس میں کہا گیا تھا کہ عام قیدیوں کے بدلے میں کل بھوشن یادیو کو رہا کر دیا جائے ۔ بھارتی مطالبے کو رد کرتے ہوئے پاکستان نے واضح کیا کہ کل بھوشن کا معاملہ مختلف ہے وہ بھارتی بحریہ کا افسر ہے جسے بھارتی خفیہ ایجنسی ''را'' نے پاکستان بھیجا تھا تاکہ پاکستان میں دہشت گردی اور تخریب کاری کی جائے اس کی وجہ سے یہاں کتنی معصوم جانوں اور املاک کا ضیاع ہوا۔دفتر خارجہ کے ترجمان نے کہا کہ بھارتی مطالبہ سمجھ سے بالاتر ہے بھارتی جاسوس اور دہشت گرد کو عام قیدی سمجھنا حقائق کو جھٹلانے کی بھارتی کوشش ہے ترجمان نے کہا کہ پاکستان بھارت کے ساتھ 2008ء کے قونصلر رسائی  کے معاہدے پر پوری طرح عملدرآمد کے لئے پرعزم ہے اس معاہدے کے تحت ایک دوسرے کی جیلوں میں بند شہریوں کی فہرستوں کا سال میں دوبار تبادلہ کیا جاتا ہے پاکستان انسانی ہمدردی کے معاملے میں سیاست نہیں کرنا چاہتا جبکہ بھارت سے بھی توقع کرتا ہے کہ معاہدے پر عملدرآمد کرے۔پانچ بھارتی شہری جن کی سزا مکمل ہوچکی تھی 22جون کو انہیں بھارت کے سپرد کیا گیا جبکہ بھارتی جیلوں میں 20پاکستانی ایسے ہیں جو قید کی مدت پوری ہونے کے باوجود رہا نہیں کئے گئے یہی نہیں 85 عام قیدیوں تک بھارت کی طرف سے قونصلر رسائی نہیں دی گئی 107ماہی گیروں تک بھی رسائی نہیں دی گئی بھارت کے منفی رویے کا یہ عالم ہے کہ پاکستانی شہریوں کے علاج معالجے کے معاملے میں بھی ویزا کے لئے اس  نے سخت شرائط لاگو کر دی ہیں۔کل بھوشن یادیو کو عام قیدی کہہ کر بھارت کس کی آنکھوں میں دھول جھونکنا چاہتا ہے حقیقت یہ ہے کل بھوشن نے اپنے جرائم کا اعتراف کیا ہے اس  کے اعترافی بیان اور شواہد کی روشنی میں فوجی عدالت نے اسے سزاے موت دی ہے اپیلٹ کورٹ نے اس کی اپیل مسترد کر دی جس کے بعد اس نے آرمی چیف سے معافی کی اپیل کی ہے بھارت نے عالمی عدالت انصاف سے اس کی سزا پر عملدرآمد روکنے کے سلسلے میں حکم امتناعی حاصل کر رکھا ہے کیا یہ عام قیدی ہے؟ عام قیدی جعلی ناموں سے پاسپورٹ حاصل کرکے غیر قانونی راستوں سے دوسرے ملک میں جا کر دہشت گردی کا نیٹ ورک قائم نہیں کرتے یہ جاسوس اور دہشت گرد ہوتے ہیں جو اس قسم کا ٹاک سرانجام دیتے ہیں یہ قونصلر رسائی کے مستحق ہوتے ہیں نہ معافی کے' ان سے وہی سلوک ہوتا ہے جو پکڑے جانے والے جاسوسوں اور دہشت گردوں سے ہوتا ہے۔