پارلیمنٹ کو مضبوط بنانے کا عزم' وزیراعظم کی ترجیحات۔۔۔ضمیر نفیس

وزیراعظم شاہد خاقان عباسی جس تیزی سے گڈ گورننس کے لئے متحرک ہوئے ہیں۔ اس سے یہی اندازہ لگایا جاسکتا ہے کہ جون 2018ء تک جو ان کی حکومت کی آئینی مدت کی تکمیل کے لمحات ہوں گے وہ زیادہ سے زیادہ کارکردگی پیش کرکے ایک بار پھر عوام کو اپنی پارٹی کی جانب متوجہ کرنا چاہتے ہیں۔ان کے معمولات کے بارے میں جو اطلاعات موصول ہوئی ہیں اس سے یہ واضح ہوتا ہے کہ وہ دفتری ورک پر بھی زیادہ وقت صرف کرتے ہیں اور فائلوں پر فوراً فیصلے کرتے ہیں انہوں نے یہ بھی اعلان کیا ہے کہ ہر منگل کو باقاعدگی سے کابینہ کا اجلاس ہوا کرے گا اور وہ خود باقاعدگی  کے ساتھ پارلیمنٹ کے دونوں ایوانوں میں جائیںگے پیر کے روزا انہوں نے سینٹ  کے پہلے ہی روز ایوان کی کارروائی میں شرکت کی اور چیئرمین سینٹ و ارکان کو یقین دلایا کہ وہ باقاعدگی سے اجلاس میں شرکت کیا کریں گے اس موقع پر چیئرمین نے بھی ان سے استدعا کی قواعد کے مطابق ہفتے میں ایک روز اجلاس میں ان کی شرکت لازمی ہے اس موقع پر وزیراعظم نے اپنے مختصر خطاب میں ایک وڈیک معاملے میں ارکان کی کارکردگی کی تحسین کی۔یہ امر خوش آئند ہے کہ انہوں نے دونوں ایوانوں میں باقاعدگی سے شرکت کا عزم ظاہر کیا ہے پارلیمنٹ کے استحکام کے لئے یہ ضروری ہے کہ وزیراعظم اور ان کی کابینہ کے ارکان اس کے اجلاسوں میں موجود ہوں اور اس کی کارکردگی میں اضافہ کے حوالے سے اپنا کردار ادا کریں حکومت اور اپوزیشن کی مشترکہ کوششیں اور کارکردگی ہی مجموعی طور پر پارلیمنٹ کی طاقت میں اضافہ کا باعث بنتی ہے' کارکردگی جوں جوں بڑھتی ہے اسی تناسب سے پارلیمنٹ کی طاقت میں بھی اضافہ ہوتا ہے۔یہ امر بھی قابل تحسین ہے کہ وزیراعظم عباسی ذاتی پبلسٹی اور نام و نمود کے زیادہ قائل نہیں وہ کارکردگی پر یقین رکھتے ہیں انہوں نے یہ خصوصی ہدایت کی ہے کہ حکومتی اشتہارات میں ان کی تصویر  شائع نہ کی جائے یوم آزادی کے موقع پر بھی انہوں نے سرکاری اشتہارات سے اپنی تصویر نکلوا دی تھی اور کہا تھا کہ انہوں نے ایسا کوئی کارنامہ سرانجام نہیں دیا کہ قائداعظم اور لیاقت علی خان کے ساتھ ان کی تصویر شائع کی جائے۔وزیراعظم عباسی صوبوں کی تعمیر و ترقی پر بھی پختہ یقین رکھتے ہیں اور ان کی یہ کوشش ہوتی ہے کہ جس صوبے کی جو ضرورت ہو وفاقی حکومت اسے پورا کرنے کی کوشش کرے کراچی کے دورے کے موقع پر انہوں نے جہاں مزار قائد پر حاضری دی وہاں اعلیٰ سطح کے اجلاس میں بھی شرکت کی اور کراچی و حیدر آباد کے لئے 30ارب روپے کا ترقیاتی پیکج دیا جس میں  سے25ارب روپے کراچی میں پانی کی فراہمی اور فائر بریگیڈ کی 60 گاڑیوں کی خرید اور دیگر ترقیاتی کاموں پر صرف ہوں گے جبکہ پانچ ارب روپے حیدر آباد کارپوریشن کو ترقیاتی منصوبوں کے لئے فراہم کئے جائیں گے۔اسی طرح انہوں نے بلوچستان کے دورے کے موقع پر جہاں امن و امان میں مزید بہتری کے لئے صوبے کی مزید معاونت کا فیصلہ کیا وہاں صوے کے زمینداروں کا یہ دیرینہ مطالبہ بھی پورا کیا جو ٹیوب ویلوں کو شمسی توانائی  پر منتقل کرنے کے حوالے سے تھا زمینداروں کا یہ کہنا ہے کہ بجلی مہنگی ہونے کی وجہ سے وہ اس کی ادائیگی کی صلاحیت نہیں رکھتے جبکہ یہ بھی مسئلہ ہے کہ غیر معمولی لوڈشیڈنگ کی وجہ سے  وہ ٹیوب ویلوں کے ذریعے پانی حاصل نہیں کر سکتے اس لئے ٹیوب ویلوں کو شمسی توانائی پر منتقل کیا جائے تاکہ وہ سستی بجلی سے استفادہ کر سکیں وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے ان کے مطالبے کو تسلیم کرتے ہوئے اعلان کیا کہ تین مراحل میں صوبے کے تمام ٹیوب ویلوں کو شمسی توانائی پر منتقل کر دیا جائے گا اس ضمن میں انہوں نے فوراً ہی کام شروع کرنے کی ہدایات جاری کیں وزیراعظم نے کوئٹہ میں یہ اعلان بھی کیا کہ بلوچستان کے ہر ضلعی ہیڈ کوارٹر میں پندرہ ارب کے گیس کے منصوبے لگائیں گے گویا متعلقہ علاقوں کو گیس کی فراہمی آسان ہو جائے گی' وزیراعظم نے کہا کہ تمام صوبوں کو گیس رائلٹی باقاعدگی سے  ادا کی جارہی ہے' ہماری خواہش ہے کہ ترقی میں کوئی صوبہ دوسرے سے یچھے نہ رہے۔وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے فاٹا اصلاحات پر عملدرآمد کے حوالے سے بھی کام کی رفتار کو تیز کرنے کی ہدایت کی اور کہا کہ رائج ایکٹ کی جلد ڈرافٹنگ کی جائے تاکہ فاٹا اصلاحات پر عمل جلد شروع کیا جاسکے وزیراعظم نے گلگت بلتستان میں اصلاحات کے  عمل کو بھی تیز کرنے کا حکم دیا' انہوں نے کہا کہ  موجودہ حکومت کے دور میں پہلی بار 2015ء میں گلگت بلتستان میں عام انتخابات منعقد ہوئے اس علاقہ کے عوام کو بلتستان یونیورسٹی دی گئی ہے تعلیم و صحت کی مزید سہولتیں فراہم کریں گے سی پیک میں  بھی اس کا حصہ نمایاں ہے۔