Get Adobe Flash player

بین الاقوامی سازشیں اوربیچارہ امن ۔۔۔انکل سام

امن کی آشا کے نام پر اسلام دشمنوں اور پاکستان دشمنوں کی زبان بولنے والے انسانوں سے ہر اس محب وطن پاکستانی نے ہمیشہ ایک سوال کیا کہ دکھائیے  عزت غیرت اور خود مختاری کے نام پر امن اہل اسلام کا وتیرہ نہیں رہا کیا؟ ایک طرف تو یہ کہا جاتا ہے کہ پاکستان میں دخل اندازی بھارتی خفیہ اداروں اور پاکستان میں مقیم ضمیر فروش نام کے بے عمل مسلمان ایجنٹوں کے ذریعے کی جارہی ہے اور دوسری طرف یکطرفہ محبت و امن کے بے سُر واہیاتی  سلسلے خوب بڑھا چڑھا کر چلا ئے جاتے ہیں۔ مانا کہ میڈیا کو استعمال کرکے گوئبلرزم کو رواج دیا جاسکتا ہے  مگر حقیقت سے منہ نہیں موڑا جاسکتا ہے حقیقت کیا ہے ؟ اس سے کوئی واقف ہو یا نہ ہو مگر پاکستانی قوم ضرور آگاہ ہے کہ بھارتی انتظامیہ نے کبھی بھی پاکستان کو دل سے تسلیم ہی نہیں کیا چہ جائیکہ امن و محبت کو فروغ دیا جائے دراصل یہ وہی لوگ ہیں جنہیں کٹھ پتلی کے رول میں رکھ کر پاکستان دشمنی اور اسلام دشمنی کو فروغ دینے کی ناکام کوششیں کی جاتی رہی ہیں یہ انہی کوششوں کا تسلسل ہے ورنہ کشمیر جنت نظیر میں مسلسل کئی دہائیوں سے آزادی پسند کشمیریوں پر مہلک اسلحہ وار کی بدبو سے گھٹن بڑھ چکی ہے۔ یہ روایتی امن پسند دوست نما دشمن کشمیریوں کے زخموں پر مرہم کیوں لگانے کی ہمت نہیں کرتے ہیں کشمیر میں انسانی جانوں کے زیاں کو روکنا کار ثواب ہے اور اس عمل سے امن کو بہت تقویت مل سکتی ہے۔ مسلمانوں کے اس اکثریتی آبادی والے خطے کشمیر میں آزادی ان آزاد انسانوں کا حق ہے جسے بھارت غاصب کئے ہوئے ہے کشمیر ہی  ایک ایسا مسئلہ ہے جو پاکستانیوں کیلئے نزاع کا سا ماحول بنائے ہوئے ہے ہمارے دریا خشک کردئیے گئے ہیں ہمارے جانور انسان اور زراعت پیاسی ہے اور اس پیاس کی ذمہ داری بھارت پر ہے کیونکہ کشمیر سے آنے والے دریائی پانی کو ڈیم بنا کر اس کا رخ موڑ دیا گیا  ہے اے امن کی آشا کا نعرہ خباثت لگانے والو اپنی اصل پر آئو  پاکستانی مسلم بن کر اپنے اندر کی منافقت کو ختم کرو  اور اپنی بھارت ماتا کو بتائو کو وہ پانی کو قدرتی بہائو میں رہنے دے پانی کو ہتھیار کے طور پر پاکستان کیخلاف استعمال نہ کرے ورنہ پانی اپنی سطح ہموار رکھنے کے فطری فارمولے کے تحت پاکستان کے نقصان کے برابر بھارت کو نقصان دینے کا فطری حق رکھتا ہے۔ زیر زمین پانی اپنی کارروائی ڈال کر بھارت کو سیم و تھور سے ایسے ہی بنجر بنا دے گا جس طرح بھارت پاک سرزمین کو خشکی سے بنجر کرنا چاہ رہا ہے ہماری اس بات کے آثار نظر آرہے ہیں لہٰذا دشمن کی نمائندگی چھوڑ کر ایک محب وطن پاکستانی کی راہ اپنائو اسی میں دونوں ممالک کا فائدہ ہے باہمی تجارت کے نام پر ہندو مکار کو کامیابی نہ دلوائو ہماری نظر میں یہ کام ہندو مکار بنیئے کا اکیلے نہیں اس میں باطلی ٹولے کے سرغنہ امریکہ اور امریکہ کے پر وردہ اسرائیل کا برابر برابر حصہ  ہے پاکستان ایک نظریاتی اسلامی مملکت ہے اور اس کا وجود بہت ساری انسانی جانی و مالی قربانیوں کے بعد اپنے وجود میں آیا ہے اس کے اپنے تقاضے ہیں اور وہ ہیں اسلامی نظام کو قائم کرنے سے متعلق۔ گزشتہ تقریبا 65برس سے اس وطن عزیز پاکستان میں ہر کام دین اسلام کے خلاف دھڑلے سے ہو رہا ہے ہر درد دل رکھنے والا محب وطن پاکستانی رو رہا ہے اس صورت حال میں اصل حالات و واقعات پر پردہ پوشی کرکے امن کی آشا پوری نہ ہوگی ہندو مکار بنیا پاکستان دشمن ہے اور وقت گزارو اور اپنی قوت اکٹھی کرو کی پالیسی پر گامزن ہے اور اپنے زر خرید غلاموں کی ذریعے سازشوں کے ساتھ ساتھ پاکستان کو نقصان پہنچانے کے عمل کو کامیاب کرنا چاہتا ہے جو انشاء اللہ کبھی بھی کامیاب نہ ہوگا وہ اس لئے کہ پراپرپیگنڈہ اور جھوٹ سے کامیاب ملتی تو باطل کبھی کا کامیاب ہو چکا ہو تا کامیابی تو دور کی بات ہے باطلی گمراہ ٹولہ اب اپنی بربادی بھی نہیں روک پائے گا بھارت بھی اسی باطلی گمراہ ٹولے کا حصہ ہے اور یہ جو امن کی آشا کا ڈھونگ ہے یہ بھی سازش ہی ہے ڈاکٹر چشتی کا وہاں بھارت میں ملزم بنا کر رکھنا اور پھر رہا کرنا وہاں بھی کسی گہری سازش کی کڑی معلوم ہوتی ہے اس کا معاملہ وقت پر چھوڑتے ہیں ہم  ذرا سی بھارتی محبت کی جھلک بھی دکھائے دیتے ہیں کہ ابھی پچھلے دنوں بھارتی خفیہ ایجنسیوں نے میڈیا پر جن پاکستانیوں کی تصویریں دکھا کر ممبئی میں ہائی الرٹ کا جھوٹا شور مچایا تھا وہ ادھر پاکستان میں ہی موجود ہیں اور اپنی روزی روٹی میں لگے ہوئے ہیں حالانکہ بھارتی سازشی ٹولے کے مطابق یہ پاکستانی ممبئی میں داخل ہو چکے ہیں صد افسوس ان پر جو پاکستانیوں کو امن کی آشا کا درس دیتے نہیں تھکتے ہیں۔ یہ سچ ہے کہ پاکستان کے خلاف سازشوں میں بھارت اور بین الاقوامی اسلام دشمن قوتیں پوری طاقت سے کوئی لمحہ بھی ضائع نہیں کررہی ہیں ڈاکٹر چشتی کی رہائی سے لے کر عافیہ صدیقی کی قید تک اور کشمیر میں بارود کی بارشوں سے لے کر صومالی ڈاکوئوں تک تمام ہی سازشیں ہیں اس لئے اہل اسلام مومن مجاہدین کو اپنے حصے کے کام کو خوب سنبھل کر کرنا ہوگاانشاء اللہ باطلی طاقت اسلامی نوری طاقت کے مقابلے میں ہمیشہ کی طرح مات کھائے گی اس لئے تمام پاکستانیوں کو آپسی اتحاد صبر اور شجاعت کے ساتھ اخلاص کا مکمل نمونہ پیش کرتے رہنا چاہیے انشاء اللہ یہ امن کی آشا اور باطلی بھاشا کے غبارے میں ہوا بھی ٹک نہ سکے گی حالات بڑی تیزی سے رخ بدل رہے ہیں اور بالآخر یہ سارے حالات باطل کے خلاف ہو کر اس کی تباہی کا سبب بنیں گے انشاء اللہ۔