Get Adobe Flash player

امریکہ کے لئے بڑی پر یشانی ۔۔۔عبدالجبار خان

امر یکہ اور جنو بی کوریا کی سالانہ مشترکہ فوجی مشقیں شروع ہو گئی ہیں جو گیارہ روز تک جا ری رہیں گی  الچی فریڈم گارٹین نا می مشقوں میں امر یکہ اور جنوبی کوریا کے 40 ہز ار اہلکار حصہ لے رہے ہیں دوسری طر ف شمالی کو ریا نے بھی کہہ دیا ہے کہ یہ مشقیں نہ ختم ہو نے والی ایٹمی جنگ میں تبدیل ہو سکتی ہیں کیا موجودہ اشتعال انگیزی ایسے ہی چلتی رہے گی یا یہ صرف ایک دوسرے کو ڈر انے کے لئے ہے امر یکہ دنیا میں اپنے آپ کو سپر پاور سمجھتا ہے لیکن اس سپر پاور کے سامنے ہمیشہ سینہ چھو ٹے ممالک نے تانا ہے ہیرو شیما پر ایٹمی حملے کے بعد امر یکہ یہ تصور کر تا رہا ہے کہ اب کو ئی بھی ملک اس کے سامنے سراٹھا کر بات نہیں کر سکتا ہے لیکن امر یکہ جیسے بڑے اور سپر پاور ملک کو لیبیا' عراق' کیوبا' وینز ویلا  اور شمالی کو ریا نے ہمیشہ پر یشان کیے رکھا ہے امر یکہ اپنی چالاکی اور حکمت عملی کی وجہ سے لیبیا کے قذافی اور عراق کے صدام سے تو جان چھڑوا چکا ہے جبکہ کیو با کے فیدل کا سترو کو امر یکہ نے ہٹانے کے لئے سر دھڑ کی با زی لگا دی تھی لیکن امر یکہ اس کو ہٹا تے ہٹا تے اپنے دس صدور کو تبدیل کر گیا فیدل کا سترو کی طبعی مو ت سے امر یکہ کی مشکل آسان ہو ئی تو اب امریکہ شمالی کو ریا کے صدر کم جو نگ ان کو کسی نہ کسی طرح راستے سے ہٹانا چا ہتا ہے تا کہ جنو بی کور یا کی طرح شما لی کو ریا میں بھی اپنے مضبوط فوجی اڈے قا ئم کر تے ہو ئے چین کے سر پر جا بیٹھے لیکن یہ امر یکہ کا خواب تو ہو سکتا ہے اس کو حقیقت کا روپ دینے میں بہت وقت لگے گا امر یکہ اور شما لی کو ریا کی حالیہ گرما گرمی جز یرہ نما گوام کی وجہ سے ہے ۔گوام میں تقریبا ایک لاکھ 65 ہز ار امر یکی فوجی و سویلین مو جو د ہیں اس کے علاو ہ اس جزیر ے پر امر یکہ کا بڑی مقدار میں اسلحہ مو جود ہے شما لی کوریا نے دھمکی دی ہے کہ امر یکہ اپنی حرکتوں سے باز نہ آیا تو وہ گوام پر میزائل حملہ کر دے گا حال ہی میں شمالی کوریا کے بین البراعظمی میزائل تجربات کے بعد اس بات کا دعویدار ہوہے کہ امر یکہ و یورپ کے ممالک اس کے نشانے پر ہیں اس دعوے کے بعد امر یکہ شمالی کوریا پر اقتصادی پا بند یوں کومز ید سخت کر تا جا رہا ہے اس پر کم جو نگ ان کا غصہ اور زیا دہ بھڑک اٹھتا ہے اگرصدر ٹر مپ ایک بیان دیتا ہے تو وہ صبح شام ٹیو ٹر پر بیان جاری کر کے ٹرمپ کو مزید پر یشان کیے رکھتا ہے شما لی کوریا کانو جوان سربراہ کم جو نگ ان اپنے باپ اور دادا کی فوجی طبیعت اور سخت قسم کاڈکٹیٹر ہے کم جونگ ان کا دادا کم سنگ ال شمالی کوریا کا بانی تھا جنوبی کور یا کے ساتھ اس نے ہی 1950 میں جنگ شروع کی تھی اس جنگ میں امر یکہ جنو بی کوریا کی مدد کے لئے کود پڑا تھا جس کی بنیا دی وجہ یہ تھی کہ سابق سوویت یو نین کا ڈکٹیٹر جوزف اسٹالین شما لی کوریا کی مد د کر رہا تھا یہ واحد مو قع تھا جب سوویت یونین موجودہ روس اور امریکہ جیسی بڑی طا قتیں Proxy War کے طور پر لڑ رہی تھیں اس جنگ میں تیس لا کھ لو گ ہلاک ہو ئے جن میں سے 37 ہز ار امریکی شا مل تھے 1953 کواس جنگ کا اختتا م ہو ا تو جنو بی کوریا اور شما لی کوریا کے درمیا ن سرحد وں کی تقسیم ہو ئی اور دونوں مما لک کی سرحدوں کو باڑ لگا کر سیل کر دیا گیا شمالی کوریا اور جنو بی کوریا کے درمیان کشیدگی تو چلتی رہی اور امریکہ بھی تا حال اس کشیدگی کا حصہ ہے امر یکہ کی اپنی پالیسی ہے وہ اپنے مفادات کے لئے کبھی دوست کو دشمن بنا لیتا ہے تو کبھی دشمن کو دوست بنا لیتا ہے جنو بی کوریا اور امر یکہ ایک دوسرے کے اتحادی اور دوست ہیں لیکن ایک زمانے میں امریکہ جنو بی کوریا پر بھی نا راض رہا ہے 1975 میں امر یکہ اورجنوبی کوریا آمنے سا منے آگئے تھے امر یکہ کا خیا ل تھا کہ جنوبی کوریا فرانس سے ایٹمی ٹیکنا لو جی حاصل کر رہا ہے جس کی وجہ سے امر یکہ نے اپنے بغل بچے پر تین سال تک اقتصادی پابندیاں لگا ئے رکھیں اس سے ظاہر ہو تا ہے کہ امر یکہ کو اپنے مفادات سب سے پہلے عزیز ہیں امر یکہ ادھر شمالی کو ریا کے بانی کم سنگ کو ہٹانے کے چکر میں بھی رہا لیکن امر یکہ کو کامیابی نہ مل سکی کم سنگ ال کا 1994 میں انتقال ہو گیا تو اس کی جگہ اس کا بیٹا کم جو نگ ال ملک کا نیا سربراہ بنا کم جو نگ ال بھی اپنے باپ کی طر ح امر یکہ کا سخت مخالف رہا جو امر یکہ کی مخالفت کے با وجو د اپنی دفا عی و فو جی طاقت میں اضافہ کر تا رہا کم جونگ ال کا 2011  میں انتقال ہو ا تو ان کا دوسرے نمبر والا بیٹا کم جو نگ ان شمالی کوریا کا سربراہ بن گیا حالانکہ کم جو نگ ان سے بڑا ایک سوتیلا بھائی کم جو نگ نام تھا جس کو سربراہ نہ بنا نے کی بنیا دی وجہ یہ تھی وہ آرام پسند اور عیاش تھا اور اپنے باپ کی نظر میں نااہل تھا ایک مر تبہ وہ جاپان کے ائر پورٹ پر جعلی پاسپورٹ کی وجہ سے پکڑا گیا تھا کم جو نگ نام جاپان میں ڈزنی لینڈ کی سیر کر نے کے لئے جانا چاہتا ہے اس حر کت کی وجہ سے اس کے باپ نے اس کو اپنے سے الگ کر دیا کم جو نگ ان نے جب اقتدار سنبھالا تو عوام کے سامنے ایک جو شیلا نو جو ان اور سخت قسم کا ڈکیٹیٹر تھا کم جو نگ ان کا ملک کی عوام پر مکمل کنٹرول ہے اس کی مرضی کے بغیر پرندہ پر بھی نہیں مار سکتا ہے پورے ملک میں کم جو نگ ان کے نام کا کو ئی دوسرا انسان نہیں ہو گا اور کسی کو اجا زت نہیں ہے کہ وہ اپنے بچے کا نا م کم جونگ ان رکھے اگر کسی نے انجا نے میں رکھ بھی لیا ہے تو رضا کارانہ طور پر اپنے بچے کا نا م تبدیل کر لے اس طر ح کے احکا مات سرکاری طور پر جا ری کیے جا تے ہیں آپ کو یہ جان کر حیر انی ہو گی کے اس جدید دور میں جہاں سوشل میڈیا اور انٹر نیٹ کے بغیر انسان کو ادھور ا سمجھا جا تا ہے لیکن یہ تما م ترسہولیات شمالی کوریا کے عا م شہری کو حا صل نہیں ہیں ملک میں مو با ئل فو ن کی سروس تو موجود ہے لیکن اس میں انٹر نیٹ ڈیٹا اور انٹر نیشنل کا لز کر نے کی سہو لت دستیا ب نہیں ہے انٹر نیٹ کی سہولت وزراء  تعلیمی اداروں  سائنس دانوں  اور سرکاری اہلکاروں کو میسر ہے پورے شمالی کوریا میں کسی بھی کمپیو ٹر میں آپر یٹنگ سسٹم ونڈو ما ئیکروسافٹ کا نہیں ہے بلکہ شمالی کوریا کا اپنا تیار کر دہ ریڈ سٹار نا می آپر یٹنگ سسٹم ونڈو کے طور پر استعمال کیا جا تا ہے یہاں کی تعلیم کی بات کی جا ئے تو نصا ب میں زیادہ تر مو اد شما لی کوریا کے بانی اس کے بیٹے اور مو جود ہ سربراہ کے کا رنا موں اور کی کی تعر یف پر مبنی ہے کم جونگ ان کا با پ سٹرکو ں پر درجنوں جنگی ٹینکوں کے ساتھ گھومتا تھا ٹھیک اسی طرح اس کی عادت بھی اپنے با پ کی طر ح ہے جو امر یکہ کو پریشان کر نے کی خاطر اپنی تصاویر میزائلوں اور جنگی ساز وسامان کے ساتھ بنو ا کر انٹر نیٹ پر ڈال دیتا ہے کم جو نگ ان بہت ہی سخت دل قسم کا انسا ن ہے اس کے ہاں معا فی کا لفظ ہے ہی نہیں اس کی ایک اہم میٹنگ میں ایک وزیر کو اونگھ آگئی تو کم جونگ ان نے اس وزیر کو اینٹی ائر کر افٹ گن سے فائر کر واکر مروا ڈالا اس نے ایک فو جی کو مستی کر تے اور ڈانس کر تے دیکھ لیا تو اس کے سر سے لے کر پائوں تک گو لیاں مر وا کر اس کو چھلنی کر دیا کم جو نگ ان اپنے خلاف کسی بھی بغاوت کے خدشے کے پیش نظر ایسی سزا ئیں دے کرمجر موں کو نشان عبرت بنا تا رہتا ہے اس کی ان حر کتوں اور بیان با زیوں کے علاوہ خودی پسندی کی عادت کی وجہ سے چین بھی اس کی وجہ سے پر یشان ہے چین اس کے ملک بد ر ہو نے والے بھا ئی کم جو نگ نام کو اس کے متبادل لانا چا ہتا تھا جب وہ ملا ئیشیا  کے جز یرے میں رہا تو چین کی اس پر خاص نظر کر م بھی رہی فر ور ی 2017 میں کم جو نگ نام کو ملا ئیشیا  کے ائر پورٹ پر انتہا ئی چالا کی اور فلمی انداز میں قتل کر دیا گیا جس کو وی ایکس (VX) نامی انتہائی خطرناک کیمیکل سے ہلا ک گیا تھا دو خوا تین کی مدد سے اس کے چہر ے پر یہ کیمیکل رومال کے ذریعے لگایا گیا تھا جس کے بیس منٹ بعداس کی مو ت وا قع ہو گئی تھی کم جو نگ نام کی مو ت کے بعد چین کم جو نگ ان سے نا راض بھی رہا ہے۔ چین کا خیال رہا ہے کہ کم جونگ ان نے ہی اپنے45 سالہ سوتیلے بھائی کم جو نگ نا م کو مروایا ہے جس کی وجہ سے چین نے کچھ عر ص شمالی کوریا سے کوئلہ منگوانا بند رکھا اس بارے کم جو نگ ان نے کہا تھا کہ میرے بھا ئی کے قتل میں امر یکہ کا ہاتھ ہے دوسری طر ف جنو بی کوریا میں اس وقت حکو مت کے خلاف مظاہرے زوروں پر تھے۔ ان مظاہروں سے توجہ ہٹا نے کے لئے جنو بی کوریا نے بھی بیا ن دے دیا کہ اس قتل میں کم جو نگ ان کا ہاتھ ہے ماضی میں یہ بھی کہا جاتا رہا ہے کہ کم جو نگ نام کو باپ سے دور کرنے میں اس کی سوتیلی ماں کا بڑا کردار رہا ہے کیونکہ اس کا بیٹاکم جو نگ ان کبھی ملک کا سربراہ نہیں بن سکتا تھا کم جو نگ ان کے راستے کی دیو ار اس کا بھائی تھا امر یکہ بھی اس بات کا حا می تھا کہ وہ کم جو نگ ان کی بجائے اس کے سو تیلے بھا ئی کم جو نگ نام کو ملک کا سربراہ ہو نا چاہیے اگر کم جو نگ ان کی بیان بازی اور امریکہ کے بیا نا ت کو دیکھا جا ئے تو کم جو نگ نام کے قتل کے بعد زیا دہ تلخ پیدا ہو گئی ہے اس کے علاوہ شمالی کوریا کے میزائل تجر بات میں بھی تیزی آگئی ہے اورٹر مپ کے صدر بنے کے بعد تو اب ایسے لگ رہا ہے کہ امر یکہ اور شمالی کوریا میں جنگ کسی وقت بھی ہو سکتی ہے ٹر مپ بھی دما غی طور پر کم جونگ ان سے کم نہیں ہے دونوں پر جنگ کا بھو ت سوار ہے لیکن ٹر مپ کو اپنے ملک کی پالیسی اور اپو زیش کی مخالفت کا سامنا کرنا پڑتا ہے نہیں تو امر یکہ اور شمالی کوریا کے درمیان جنگ کب کی شر وع ہو چکی ہو تی اگر امر یکہ کی جنگی حکمت عملی اور پالیسی کو دیکھا جا ئے تو اس نے کبھی کسی ایٹمی قوت کے حامل ملک سے براہ راست جنگ نہیں کی ہے شمالی کوریایہ دعوی کر تا ہے اس کے اس کے پاس ایٹمی صلا حیت ہے اور جدید میز ائل ٹیکنا لو جی ہے جس کی بد ولت وہ امریکہ اور اس کے کسی اتحا دی ملک کو نشانہ بنانے کی صلا حیت رکھتا ہے جنو بی کوریا اور امر یکہ کی جنگی مشقیں کم جونگ ان کو پہل کرنے پر مجبور کرنے کے لئے کی جارہی ہیں امر یکہ یہ چاہتا ہے کہ شمالی کوریا کسی طرح پہل کرے تا کہ امر یکہ کو اس پر حملہ کرنے کا جو از مل جا ئے اگر دونوں ممالک کے درمیان جنگ چھڑ جا تی ہے تو یہ ایک عالمی جنگ کی ابتدا ہو گی جو ایٹمی حملوں کی حد تک بھی جا سکتی ہے-