Get Adobe Flash player

September 2016

30 September 2016

آئندہ ماہ کے لیے پیٹرولیم مصنوعات کی موجودہ قیمتیں برقرار رکھنے کا اعلان

وزارت پیٹرولیم نے اوگرا کی جانب سے پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کی سمری مسترد کرتے ہوئے قیمتیں برقرار رکھنے کا فیصلہ کیا ہے۔حکومت نے یکم اکتوبر سے پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ یا کمی نہ کرنے فیصلہ کیا ہے اور اوگرا کی جانب سے قیمتوں میں اضافے کی سمری مسترد کرتے ہوئے پرانی قیمتیں ہی برقرار رکھنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ اوگرا نے وزارت پیٹرولیم کو سمری میں پیٹرولیم مصنوعات میں 3 روپے 55 پیسے فی لیٹر تک مہنگی کرنے کی تجویز دی تھی۔ سمری میں پیٹرول 10 پیسے، ہائی آکٹین 3 روپے 55 پیسے، مٹی کا تیل 2 روپے 71 پیسے اور لائٹ ڈیزل 1 روپیہ 81 پیسے مہنگا کرنے جبکہ ہائی اسپیڈ ڈیزل 28 پیسے فی لیٹر سستا کرنے کی تجویز دی گئی تھی۔وزارت پیٹرولیم نے اوگرا کی سمری کو مسترد کرتے ہوئے یکم اکتوبر سے پیٹرول 64 روپے 27 پیسے، ہائی آکٹین 72 روپے 58 پیسے، مٹی کا تیل 43 روپے 25 پیسے، ہائی اسپیڈ ڈیزل 72 روپے 52 پیسے اور لائٹ ڈیزل 43 روپے 34 پیسے فی لیٹر کی سطح پر برقرار رکھنے کا عندیہ دے دیا ہے۔

Read more

آل پاکستان فٹ بال چیلنج کپ ٹورنامنٹ آج شروع ہوگا

بیس سال کے طویل عرصہ بعد قومی سطح پرآل پاکستان فٹ بال چیلنج کپ ٹورنامنٹ (آج) ہفتہ سے اکتوبر سے پشاورکے قیوم سپورٹس کمپلیکس میں شروع ہوگا۔منعقد ہونے والے اس ایونٹ میں پاکستان بھر سے بارہ نامی گرامی ٹیمیں شریک ہونگیںجن کوچارمختلف پولز میں تقسیم کیاگیاہے 'ان خیالات کااظہار خیبرپختونخوا فٹبال ایسوسی ایشن کے صدر اورپاکستان فٹبال فیڈریشن کے نائب صدرسید ظاہر علی شاہ نیخیبرپختونخواسپورٹس رائٹرز ایسوسی ایشن کے پروگرام سپورٹس فورم سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ااس موقع پرصوبائی فٹ بال ایسوسی ایشن کے جنرل سیکرٹری باسط کمال ،سپورٹس رائٹرز ایسوسی ایشن کے صدرجہانزبب صدیق بھی اس موقع پرموجودتھے انہوںنے کہاکہ کل یکم اکتوبر سے شروع ہونیوالے آل پاکستان چیلنج کپ فٹبال ٹورنامنٹ میں شرکت کے لئے بارہ ٹیمیں پشاور آ رہی ہیں یہ مقابلے پشاور کے قیوم سپورٹس کمپلیکس میں منعقد کئے جارہے ہی' انہوں نے کہا کہ پشاور کے عوام کو بیس روزہ مقابلوں سے لطف اندوز ہونے کے بھرپور مواقع ملیں گے 'ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ خیبرپختونخوا فٹبال ایسوسی ایشن ایونٹ پر بیس لاکھ روپے خرچ کررہی ہے۔ جس میں کھلاڑیوں اور آفیشلز کو تمام بہترین سہولتیں فراہم کی جائیں گی 'انہوں نے کہا کہ اجلاس میں ٹورنامنٹ کے دوران انٹرنیشنل فٹبالرز کو دعوت دینے کا فیصلہ کیا گیا تا کہ وہ بھی پشاور میںآ کرٹاپ ٹیموں کو ایکشن میں دیکھ سکیں'انہوں نے بتایا کہ ٹیموں میں پی ٹی وی 'پی آئی اے 'کے ای ایس سی 'اسلام آباد'پنجاب 'کے آر ایل 'پولیس'فاٹا 'پی اے ایف ' کے الیکٹرک اورخیبرپختونخوا شامل ہیں ان ٹیموں کو چار مختلف گروپوں میں تقسیم کیا گیا ہے۔

Read more

لائبہ اعجاز نے ویمن انڈر15سکواش لیگ کاٹائٹل اپنے نام کرلی

پشاور کی ہونہار سکواش پلیئر لائبہ اعجاز نے شاندار کارکردگی کا مظاہرہ پیش کرتے ہوئے جونیئر ایج گروپ انڈر15 سکواش لیگ ٹرافی جیت لی 'خیبرپختونخوا سکواش ایسوسی ایشن کے زیر اہتمام پشاور کے پی اے ایف ہاشم خان سکواش کمپلیکس میں جاری مقابلوں میں لائبہ اعجاز نے لیگ میں اپنے تمام میچ جیت کر ٹرافی اپنے نام کی 'سابق برٹش چیمپئن قمرزمان فائنل کے موقع پر مہمان خصوصی تھے 'چیمپئن شپ میں اکیس گرلز کھلاڑیوں نے حصہ لیا 'آخری روز کے میچوں میں لائبہ اعجاز نے نعیمہ خالد کو چار سیٹس کے میچ میں شکست دی 'لائبہ کی جیت کا سکور نو گیارہ 'گیارہ چھ 'گیارہ پانچ اور گیارہ نو رہا 'دوسرے میچ میں لائبہ اعجاز نے مناہل کو سٹریٹ سیٹس میں گیارہ چھ 'گیارہ پانچ اور گیارہ پانچ سے شکست دی دیگر میچوں میں نمرہ خالد نے ایمان خان کو گیارہ آٹھ 'گیارہ پانچ اور گیارہ نو سے شکست دے کر دوسری پوزیشن حاصل کی 'نمرہ عقیل کی بہن حراء عقیل نے تیسری پوزیشن حاصل کی انہوں نے نعیمہ خالد نے 3-2 سے شکست دی'نعیمہ خالد نے چوتھی پوزیشن حاصل یک انہوں نے ثناء کو آخری لیگ میچ میں سٹریٹ سیٹس میں گیارہ چھ 'گیارہ پانچ اور گیارہ چار سے شکست دی 'دیگر میچوں میں مائرہ نے ثناء کو 3-0 سے ہرایا۔


Read more

پاکستان اور ویسٹ انڈیز کے درمیان دوسرا ونڈے کل کھیلا جائیگا

پاکستان اور ویسٹ انڈیز کے درمیان ایک روزہ سیریز کا دوسرا میچ کل(اتوار)2اکتوبر کو شارجہ سٹیڈیم میں کھیلاجائیگاجبکہ تیسرا ون ڈے 5اکتوبر بروز بدھ کو ابوظہبی میں کھیلا جائے گا۔قومی ون ڈے ٹیم کی قیادت اظہر علی کریں گے۔پاکستان اور ویسٹ انڈیز کے درمیان دوسرا ون ڈے میچ پاکستانی وقت کے مطابق شام 4 بجے کھیلاجائیگا،قومی ٹیم نے ویسٹ انڈیز کے خلاف تین میچوں کی ٹی ٹوئنٹی سیریز میں کلین سوئپ کیا ہے تاہم ون ڈے سیریز دونوں ٹیموں کے لیے بڑی اہمیت کی حامل ہے۔پاکستان ویسٹ انڈیز ون ڈے سیریز میں پاکستان کے لیے رینکنگ بہتر بنانے کا موقع ہے ۔اگر قومی ٹیم ویسٹ انڈیز کو تینوں ون ڈے میں شکست دینے میں کامیاب ہوجاتی ہے تو وہ عالمی رینکنگ میں آٹھویں نمبر پر آجائے گی۔ اگر پاکستان نے8 ویں پوزیشن حاصل کر لی تو پاکستان کو بنگلہ دیش میں کوالیفائنگ رائونڈ نہیںکھیلنا پڑے گا۔ون ڈے کی عالمی رینکنگ میں اس وقت ویسٹ انڈیز آٹھویں اور پاکستان نویں نمبر پر ہے۔پاکستان اور ویسٹ انڈیز کے درمیان تین ون ڈے انٹرنیشنل میچوں کی سیریز کاآغاز 30 ستمبر سے ہوگیا ہے ،دوسرا ون ڈے شارجہ میں ہی کل(اتوار )2اکتوبر کوکھیلاجائیگا۔


Read more

قانونی چپقلش کے سبب بھارتی کرکٹ بورڈ پر معطلی کا خطرہ منڈلانے لگا

قانونی چپقلش کے سبب بھارتی کرکٹ بورڈ پر معطلی کا خطرہ منڈلانے لگا ہے، اگر سپریم کورٹ نے لودھا کمیٹی کی سفارشات قبول کرلیں تو آئی سی سی، بی سی سی آئی پر پابندی عائد کر سکتی ہے۔لودھا پینل کی سفارشات میں کہا گیا تھا کہ بھارتی بورڈ ہر قدم پر اصلاحات کیلیے رکاوٹ کھڑی کرتا تھا،وہ عدالت کی جانب سے جاری کیے گئے احکامات کی کھلی خلاف ورزی کررہا ہے، پینل نے صدر انوراگ ٹھاکر سمیت بورڈ کے اعلی حکام کیخلاف کارروائی کی سفارش بھی کی تھی، یاد رہے کہ آئی سی سی قوانین کی شق 2.9 کے مطابق کسی بھی بیرونی حکومتی یا سیاسی مداخلت کی صورت میں کونسل ایکشن لینے کی مجاز ہے۔ سپریم کورٹ نے احکامات پر عمل نہ کرنے پر بی سی سی آئی کو شدید تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا تھا کہ ہم عمل درآمد کروانا جانتے ہیں، بہتر ہے کہ بورڈ خود سدھر جائے یا ہم سدھاریں گے۔عدالت نے بی سی سی آئی کو لودھا پینل سفارشات کی تعمیل نہ کرنے کے حوالے سے اپنا جواب دینے کیلیے 6 اکتوبر 2016 تک مہلت دی ہے، ممکنہ طور پر عدالتی حکم نامے کی روشنی میں اسی دن بورڈ کی قسمت کا فیصلہ بھی ہو گا۔

Read more

خواجہ کلیم غنی کے اعزاز میں چیمپئن شپ کا انعقاد

کراچی میں کالج اور یونیورسٹی سطح کے طلبا اور 20سال سے کم عمر لڑکے اور لڑکیاں کے لئے انڈرٹوئنٹی ایتھلیٹک چیمپئن شپ کا انعقاد کیا جارہاہے جو یکم اکتوبر کوکراچی کے پاکستان اسپورٹس بورڈ اینڈ نیشنل اسپورٹس ٹریننگ کوچنگ سینٹر میں ہو گی۔سندھ ٹریک اینڈ فیلڈ کلب اورپاکستان اسپورٹس بورڈ اسلام آباد کے تعاون سے ایتھلیٹک چیمپئن شپ کا انعقاد کا مقصدخواجہ کلیم غنی کو خراج عقیدت پیش کرنا ہے۔خواجہ کلیم غنی نے 1957میںآسٹریلیا میں منعقدہ رکاوٹوں کی دوڑ میںایشیائی عالمی ریکارڈ توڑا تھا۔ یہ ریکار ڈ440 میٹر رکاوٹوں کو عبور کرنے کا تھا۔کلیم غنی 1956کے اولمپک گیمز کا بھی حصہ تھے جہاں انہوں نے چار سومیٹر رکاوٹوں کی دوڑ میں پاکستان کی نمائندگی کی تھی۔ کلیم غنی 1933میں پیدا ہوئے جبکہ 2003میں دارفانی سے کوچ کرگئے ۔چیمپئن شپ میں20سال سے کم عمر کے لڑکے اور لڑکیاں حصہ لے سکیں گی ۔چیمپئن شپ میں ٹریک اور فیلڈ کیٹیگری بھی شامل ہوں گی۔ایونٹ کی آرگنائزر روما الطاف کا کہناتھا کہ ہمارے پاس کم عمر اور بڑی عمر کے گروپوں پر مشتمل باصلاحیت کھلاڑیوں کی ایک بڑی تعداد ہیتاہم حالیہ مقابلوں میں 17سے19 سال کی عمر کے لوگوں نے زیادہ شرکت نہیں کی ۔


Read more

غوری کلب رحمت علی فٹبال ٹورنامنٹ کے کوارٹر فائنل میں پہنچ گئی

ڈسٹرکٹ فٹ بال ایسوسی ایشن کے زیراہتمام جاری چوہدری رحمت علی میموریل فٹ بال ٹورنامنٹ میںغوری کلب اسلام آباد نے ینگ محمڈن راولپنڈی کو 2-0 گول ہرا کر کوارٹر فائنل کے لئے کوالیفائی کر لیاہے،میونسپل سٹیڈیم میں کھیلے گئے ٹورنامنٹ کے پری کوارٹر فائنل میچ میں وقفے تک غوری کلب کو ینگ محمڈن کلب کے خلاف 1-0 کی برتری حاصل تھی، دوسرے ہاف میں غوری کلب نے مزید ایک گول کے مقابلہ 2-0 گول سے جیت لیا،فاتح ٹیم کی جانب سے یاسر اور صابر نے ایک ، ایک گول کیا، ینگ محمڈن کلب کے کھلاڑیوں نے مارجن کم کرنے کی بھر پور کوشش کی لیکن ناکام رہے،ریفری کے فرائض طاہر پرویز، عامر اقبال اور شکیل نے انجام دیئے ڈسٹرکٹ فٹ بال ایسوسی ایشن کے چیئرمین شوکت علی خان نے بتایا کہ ٹورنامنٹ کے دوسرے رائونڈ میں بارہ ٹیمیں ناک آئوٹ سسٹم پر شرکت کر رہی ہیں، رحمت علی میموریل فٹ بال ٹورنامنٹ میںغوری کلب اسلام آباد نے ینگ محمڈن راولپنڈی کو 2-0 گول ہرا کر کوارٹر فائنل کے لئے کوالیفائی کر لیاہے،فاتح ٹیم کی جانب سے یاسر اور صابر نے ایک ، ایک گول کیا۔


Read more

پاکستان نے پہلے ون ڈے میں ویسٹ انڈیز کو 111 رنز سے شکست دیدی

پاکستان نے تین ایک روزہ میچز کی سیریز میں مہمان ویسٹ انڈیز کو 111 رنز سے شکست دے کر سیریز میں 0-1 کی برتری حاصل کرلی۔ شارجہ کرکٹ اسٹیڈیم میں کھیلے گئے میچ میں ڈک ورتھ لوئس قانون کے تحت پاکستان نے ویسٹ انڈیز کو جیت کے لئے 287 رنز کا ہدف دیا جس کے تعاقب میں مہمان ٹیم 175 رنز پر پویلین لوٹ گئی۔ ہدف کے تعاقب میں ویسٹ انڈیز کے اوپننگ بلے باز جانسن چارلس اور بریتھ ویٹ نے اننگز کا آغاز کیا اور پہلی وکٹ پر 27 رنز کی شراکت قائم کی تو چارلس 20 رنز بنا کر محمد عامر کا شکار بن گئے جس کے بعد بریتھ ویٹ بھی 14 رنز ہی بنا سکیں جنہیں حسن علی نے آئوٹ کیا۔ تیسرے آئوٹ ہونے والے کھلاڑی ڈیرن براوو تھے جو 12 رنز بنا کر محمد نواز کی گیند پر بولڈ ہوئے۔وقفے وقفے مہمان ٹیم کی وکٹیں گرتی چلی گئیں اور پوری ٹیم 38.4 اوورز میں 175 رنز بنا کر پویلین لوٹ گئی۔ پاکستان کی جانب سے محمد نواز نے 4، حسن علی 3، عماد وسیم، محمد عامر اور وہاب ریاض نے ایک ایک وکٹ حاصل کی۔اس سے قبل ویسٹ انڈیز کے کپتان جیسن ہولڈر نے ٹاس جیت پر پاکستان کو پہلے کھیلنے کی دعوت دی تو پاکستانی کپتان اظہرعلی اور شرجیل خان نے اننگز کا آغاز کیا، کپتان نے اسکور بورڈ کو زحمت دیے بغیر میچ کی پہلی ہی گیند پر پویلین لوٹ گئے جس کے بعد شرجیل خان نے بابراعظم کے ساتھ ملکر کر 82 رنز کی شراکت قائم کی اس دوران شرجیل نے 3 چھکوں اور 6 چوکوں کی مدد سے نصف سنچری اسکور کی اوراگلی ہی گیند پر 54 رنز بنا کر آئوٹ ہوگئے جب کہ شعیب ملک بھی صرف 6 رنز ہی پویلین لوٹ گئے۔بابر اعظم نے شاندار بیٹنگ کرتے ہوئے اپنی نصف سنچری مکمل کی اور ٹی ٹوئنٹی ٹیم کے کپتان سرفراز احمد کے ساتھ ملکر چوتھی وکٹ کے لیے 99 رنز کی شراکت داری قائم کی جس کے بعد سرفراز 35 رنز بنا کر آئوٹ ہوئے تاہم بابر اعظم دوسرے اینڈ سے ڈٹے رہے اور ایک روزہ کیرئیر کی اپنی پہلی سنچری مکمل کی، محمد رضوان بھی صرف 11 رنز ہی بناسکے جب کہ بابر 120 رنز کی اننگز کھیل کر آئوٹ ہوئے۔ عماد وسیم نے 24 اور محمد نواز نے 19 رنز بنائے۔ ویسٹ انڈیز کی جانب سے کارلوس برتھ ویٹ نے 3، سلیمان بین، سنیل نارائن، جیسن ہولڈر اور گبریل نے ایک ایک وکٹ حاصل کی۔واضح رہے کہ پاکستان نے ویسٹ انڈیز کو تین ٹی ٹوئنٹی میچوں کی سیریز میں وائٹ واش کیا تھا۔

Read more

ذمہ داریاں ۔۔۔ کرن وقار

دور جہالت میں لوگ بیٹی سے اتنی نفرت کرتے تھے کہ زندہ دفن کر دیا کرتے تھے ' اور آج کل جدید دور میں لوگ بہت پڑھ لکھ گئے ہیں بہت ترقی کر گئے ہیں' لیکن بیٹی کی ذلت وہیں کی وہیں کھڑی ہے بس طریقہ بدل گیا ہے۔ آج کے دور میں بیٹی کو پیدا ہوتے زندہ دفن نہیں کیا جاتا بلکہ بیٹی کو لاڈ پیار سے بڑا کیا جاتا ہے ہر خواہش پوری کی جاتی ہے اور جب شادی ہوتی ہے تو ماں باپ بیٹی کو اپنی اوقات سے بڑھ کر جہیز بھی دیتے ہیں لیکن افسوس کہ بیٹی کی تربیت صحیح نہیں کرتے ' وقت کا کچھ پتہ نہیں ہوتا بیٹی ہمیشہ پرائی ہوتی ہے پتہ نہیں کیوں ماں باپ بھول جاتے ہیں کہ بیٹی کو ہر حالات کا مقابلہ کرنا سکھائیں سسرال میں جا کر کیا کیا مسئلے درپیش آئیں گے بیٹی کو سمجھاتے نہیں ' آج کل کے اکثر ماں باپ اپنی بیٹی کو کہتے ہیں بیٹی سسرال والوں کی ایک نہیں سننی' تم ہماری لاڈلی بیٹی ہوہم نے بہت پیار سے تمہیں پالا ہے لوگوں کے لئے نہیں پالا ، سسرال میں گزارا نہ ہو تو واپس آجانا اپنے شوہر ، ساس، سسر ، نند کی ایک نہ سننا ہمیں فوراً کال کر لینا ہم آ کر تمہیں لے جائیں گے تم ہم پر بوجھ نہیں ہو۔ یہ خود وہ ہی ماں ہے جو سسرال والوں کی سر توڑ خدمت کر کے ٹائم گزارتی ہے آگے بیٹی کو کیا سکھا رہی ہے۔ میں پھر واضح کر دوں کہ سب والدین کی بات نہیں 'اکثر والدین یہ ہی تربیت کر رہے ہیں۔جوماں باپ اس قسم کارویہ رکھتے ہیں وہ ضرورغورکریں ،آیا وہ اپنی بیٹیوں کے نادان دوست تونہیں ۔اناکاراستہ فناکاراستہ ہے،انسان کو اناسے فناتک کاسفر طے کرنے میں کچھ پل لگتے ہیں۔والدین اپنی بیٹی سے محبت تو کرتے ہیں لیکن جہاں ایسی تربیت ہو گی وہاں بیٹی اپنے سسرال میں کیسے ایڈجسٹ کر سکے گی جس بیٹی کو اُس کے ماں باپ نے شہ دے رکھی ہو کہ تم نے زیادہ کام نہیں کرنے ، کوئی کچھ کہے تو چلی آنا ہم تمہارے والدین ہیں ہم تمہیں بہت پیار کرتے ہیں تم ہمارے اوپر بوجھ نہیں ہو۔ خیر یہ تو تھی ماں باپ کی غلط تربیت جو وہ بیٹی کی کرتے ہیں جس کی وجہ سے آج کل عدالتیں بھری پڑی ہیں طلاق کے کیسوں سے اور مدرسوں میں لائن لگی ہوئی ہے طلاق کے فتویٰ لینے والوں کی۔یہاں میں اپنی مثال دیتا ہوں اگر مجھے میرے والدین کہیں کہ بیٹا تم کچھ نہ کرو نہ کمائو ہم آپ کی ہر ضرورت پوری کریں گے تو میں تو کبھی بھی نوکری نہ کروں جب مفت میں سب ضرورت پوری ہو گی تو مجھے کیا ضرورت ہے نوکریوں کی ٹینشن لینے کی اسی طرح اس بیٹی کو سسرال میں رہنے کی کیا ضرورت ہے۔بیٹی کو طلاق دلوانے میں سب سے بڑا کردار اس کی ماں کا ہوتا ہے۔ سیانے کہتے ہیں ماں اچھی ہے تو بیٹی کیسی بھی ہو بیٹی کا گھر ماں چلوا لے گی۔ لیکن خدا را آج کل کی مائوں کو کیا ہو گیا ہے۔ خیر جب بیٹی کو طلاق ہو جاتی ہے تو ماں باپ صدا تو رہتے نہیں سر پر پھر بھائی ہوتے ہیں اُن کے سر پر بوجھ بن جاتی ہیں طلاق یافتہ عورتیں ، بھابیاں برداشت نہیں کرتیں کہ اُن کی طلاق یافتہ نند پر ہمارا شوہر خرچ کرے یہ سب آخر اُس طلاق یافتہ عورت کی اپنی اور والدین کی غلطیوں سے زندگی' زندگی نہیں رہتی زندہ لاش بنا دیتے ہیں والدین اپنی لاڈلی بیٹی کو' ذرا نہیں سوچتے اپنی بیٹی کا مستقبل۔اللہ نے ہر عورت اور مرد میں خواہش رکھی ہے مرد تو 4 شادیاں بھی کر سکتے ہیں لیکن طلاق یافتہ عورت سے شادی کون کرتا ہے؟ وہ عورت کیا کرے گی ؟ جب والدین خود تو مر جاتے ہیں بیٹی کا گھر خراب کر کے بھائی بھابیاں خرچہ نہیں دیتیں۔پرانے وقتوں میں بیٹی کو رخصت کرتے ہوئے کہا جاتا تھا بیٹی یہاں سے ڈولی جا رہی ہے وہاں سے جنازہ ہی اُٹھنا چاہئے 'تمہیں ہر حالات کا مقابلہ کرنا ہے اور اُس وقت عورتیں ہر حالات کا مقابلہ کرتی بھی تھیں۔ میں دعوے سے کہہ سکتا ہوں کہ 95% فیصد عدالتوں میں طلاق و خلع کے کیسوں میں کوئی وجہ نہیں ہے وجہ بنائی گئی ہیں طلاق کی۔ برداشت ختم ہو چکا ہے آج کل کی لڑکیوں لڑکوں میں، مہنگائی کا دور ہے بیروزگاری ہے آج پیسہ کمانا کتنا مشکل ہے آج کل کی عورتوں کو کیا پتہ پیسہ کیسے کمایا جاتا ہے شوہر کبھی ٹینشن میں گھر آکر کچھ کہہ ہی دے گا بیوی کو تو بیوی کو ''سیلف ریسپکٹ'' کا خیال آجاتا ہے کہ میری تو یہاں کوئی عزت نہیں ہے میں امی کو کال کرتی ہوں آکر لے جائیں آگے سے امی بھی ویسی فوراً آجاتی ہیں لینے چل بیٹی تم لاوارث نہیں ہم تیرے شوہر کو دیکھ لیں گے۔ بیٹی اور شیر ہو جاتی ہے شوہر کو اپنے ماں باپ کے سامنے ہی کہنے لگتی ہے میں لاوارث نہیں تمہاری روٹی کی بھوکی نہیں میں، میرے ماں باپ نے مجھے پال پوس کر بڑا کیا ہے آج بھی رکھ سکتے ہیں وہ مجھے اپنے گھر آگے ماں باپ بھی ویسے پڑھے لکھے جاہل ۔بہت سی طلاقوں کے پیچھے لڑکی کے گھر والوں کی عجلت اور بے صبری کا ہاتھ ہوتا ہے۔

Read more

کشمیریت ، جمہوریت اور انسانیت۔۔۔ڈاکٹر سلیم خان

اڑی میں ہونے والے حملے کو کشمیر کے حالیہ احتجاج و تشدد کے واقعات اور برہان وانی کے انکائونٹر سے کاٹ کر دیکھنا ممکن نہیں ہے اس لئے کہ یہ ایک سلسلے کی کڑی ہے۔برہان وانی ایک 22 سالہ نوجوان تھا جس پر 150 نوجوانوں کو حزب المجاہدین میں شامل کرنے اور دہشت گردی کے چند واقعات میں ملوث ہونے کا الزام تھالیکن 8 جولائی کوایک مڈ بھیڑ میں اسے ڈھیر کردیا گیا۔اگربرہان کوگرفتار کرکے عدالت میں پیش کردیا جاتا اور اس کے جرائم کی اسے دستور کے مطابق قرار واقعی سزا سنائی جاتی اور''کشمیریت ، جمہوریت اور انسانیت'' کا پاس و لحاظ رکھا جاتاتو شاید یہ خلفشار رونما نہیں ہوتا۔برہان وانی کی عسکریت پسندی کے پسِ پشت عوامل کا پتہ لگا کر اس کا سدِ باب ضروری تھا۔ برہان کے والد صدر مدرس اور والدہ پوسٹ گریجویٹ استانی ہیں۔ برہان اپنی جماعت کا ذہین ترین طالبعلم تھا لیکن اس کے بے قصور بھائی خالد وانی کو آج سے سات سال قبل فوجیوں نے بلاوجہ ہلاک کردیا۔ اپنے بھائی کے قتل کا انتقام لینے کی خاطر برہان عسکریت پسندی کی جانب راغب ہوا۔ اگر خالد پر ظلم نہیں ہوتا یا اس کے قاتلوں کو حکومت پھانسی کے تختے پر پہنچا دیتی تو برہان حکومت کا احسان مند ہوتا لیکن ایسا نہیں ہوا۔ایک جائزے کے مطابق وادی میں کل ٥٤١ متحرک عسکریت پسند ہیں جن میں ١٩ کا تعلق وادی سے ٤٥ پاکستان سے آئے ہیں۔ ان عسکریت پسندوں پر قابو پانے کیلئے لاکھوں کی تعداد میں موجود حفاظتی دستے کافی ہیں لیکن برہان وانی کی ہلاکت نے اس کو راتوں رات کشمیر کا ہیرو بنادیا اور بی جے پی کی سخت گیری نے اسے زیرو کرکے رکھ دیا۔عمر عبداللہ کا بیان درست ہے کہ قبر کے اندر برہان وانی کی موجودگی ذرائع ابلاغ کی بہ نسبت کہیں زیادہ خطرناک ہے۔ مظاہروں کو سختی سے نمٹنے کی حکمت عملی نے کشمیریوں کو بے خوف کر دیا۔ اب یہ حالت ہے کہ صوبے کی وزیراعلیٰ بے دست و پا ہوگئی ہیں۔ ان کے ارکان اسمبلی و پارلیمان اپنے گھروں میں دبکے بیٹھے ہیں۔ کسی کے گھر پر حملہ ہوتا ہے اور مظاہرین حفاظتی دستوں سے اے کے ٧٤ چھین کر لے جاتے ہیں۔ کسی کا گھر جلا دیا جاتا ہے اور کوئی استعفیٰ دے دیتا ہے۔ پہلے تو حکومت حریت سے ملاقات کیلئے تیارنہیں تھی مگر اب توحریت کل جماعتی پارلیمانی وفد تک سے ملاقات کرنا گوارہ کرنے پر راضی نہیں ہے۔برہان وانی انکائونٹر سے شروع ہونے والے احتجاج کی بابت کوئی سوچ بھی نہیں سکتا تھا کہ وہ ڈھائی ماہ چلے گا۔ اس دوران دو مرتبہ وزیرداخلہ راجناتھ سنگھ کو اپنا امریکہ کا دورہ منسوخ کرنا پڑا اورممکن ہے اسی سبب سے خودوزیراعظم نے بھی اقوام متحدہ کے سالانہ اجلاس سے دور رہنے کا فیصلہ کیا ہوجو حیرت انگیز ہے۔ گزشتہ ڈھائی سالوں کے اندر وزیر اعظم نریندر مودی براک اوبامہ سے ٨ بار مل چکے ہیں۔ صدر کی حیثیت سے اقوام متحدہ کے اجلاس کو خطاب کرنے کے آخری موقع پرمودی جی کا وہاں نہ ہونا حیرت انگیز تھا لیکن غالباً کشمیر کی دگرگوں صورتحال ان کے پیروں کی زنجیر بن گئی۔براک اوبامہ نے اپنے آخری خطاب میں نہ کشمیر کا ذکر کرکے ہندوستان کو ناراض کیا اور نہ اڑی کی مذمت کرکے پاکستان کی ناراضگی مول لی لیکن یہ ضرور کہا کہ بلاواسطہ جنگ سے مسائل حل نہیں ہوں گے اس کا اطلاق دونوں ممالک پریکساں طور سے ہوتا ہے۔ جس طرح کا حملہ اڑی میں ہوا ایسے حملے ہندوپاک دونوںممالک میں ہوتے رہتے ہیں۔ان میں یکسانیت یہ ہے کہ ہر مقام پر حملہ آور سارے شواہد ساتھ لے کر جاتے ہیں اور انہیں محفوظ رکھتے ہیں۔ پاکستان میں ہونے والے حملوں کیلئے ہندوستان کو اور بھارت میں ہونے والے دہشت گردی کا الزام فوراًپاکستان پر لگا دیا جاتا ہے۔ اسی کے ساتھ دوسری جانب سے انکاربھی ہوجاتا ہے۔ پاکستان کہتا ہے کہ یہ حکومت ہند ازخود کروارہی ہے اور بھارت کے مطابق یہ پاکستان کی آغوش میں پلنے والے دہشت گردوں کا کارنامہ ہوتا ہے لیکن ان الزام تراشیوں سے قطع نظر اس کی بھاری قیمت عوام اور فوجی چکاتے ہیں۔ اڑی حملے کی بابت بھی یہی ہوا۔ حکومت ہندکا موقف ہے کہ سرحد پار سے آنے والے دہشت گردوں نے انجام دیا جبکہ پاکستان کا الزام ہے کہ کشمیر کی تحریک آزادی اور وہاں انسانی حقوق کی پامالی کی جانب سے توجہ ہٹانے کیلئے یہ حملہ کروایا گیا ہے۔ ہندوستان کی جانب سے دہشت گردوں کے پاس ملنے والے سازوسامان کا حوالہ دیا جارہا ہے اور ان کے جی پی ایس کا ریکارڈ پیش کیا جارہا ہے جبکہ پاکستان یہ کہتا ہے فوجی چھائونی کے حفاظتی شکنجہ کو توڑ کر کسی کا اندر داخل ہوجانا تقریباً ناممکن ہے یہ کشمیری عسکریت پسندوں کا ردعمل ہوسکتا ہے۔ اس میں شک نہیں کہ اڑی حملے کے بعد ساری دنیا کی توجہ کشمیر کے مسئلہ سے ہٹ گئی اور پاکستان الگ تھلگ سا پڑ گیا ہے لیکن ان حالات میں بھی روس کے ساتھ پاکستان کی مشترکہ فوجی مشقیں سرکاری دعویٰ کا منہ چڑاتی ہیں۔ پہلے تو یہ خبر آئی تھی کہ روس نے فوجی مشق منسوخ کردی ہے لیکن اب یہ کہہ کر ہم اپنے آپ کو بہلا رہے ہیں کہ اس کے افتتاح کو گلگت سے منتقل کردیا گیا ہے۔


Read more

گزشتہ شمارے

<< < September 2016 > >>
Sun Mon Tue Wed Thu Fri Sat
        1 2 3
4 5 6 7 8 9 10
11 12 13 14 15 16 17
18 19 20 21 23 24
25 26 27 28 29 30