بارش زیادہ ہوئی، کچھ نہیں کر سکتا، میئر کراچی

میئر کراچی وسیم اختر نے کراچی کے مختلف علاقوں کا دورہ کیا لیکن انکے دورے بھی شہر قائد کی عوام کو ریلیف فراہم نہ کر سکے۔ میئر کراچی کہتے ہیں کہ جب تک شہر کا انفرا سٹریکچر ٹھیک نہیں ہو گا، نالے صاف نہیں ہوں گے اور سیوریج کا نظام بہتر نہیں ہو گا۔وسیم اختر نے رین ایمرجنسی سینٹر، حسن سکوائر، سوک سینٹر، شفیق موڑ اور دیگر مقامات میں نکاسی آب کا جائزہ لیا، دنیا نیوز سے گفتگو میں انکا کہنا تھا کہ وسائل نہیں ہیں، جو ہو سکتا ہے وہ کر رہے ہیں۔ وسیم اختر کا مزید کہنا تھا کہ صفائی کی ذمہ دار سندھ حکومت ہے، سندھ حکومت کے پاس سالڈ ویسٹ منجمنٹ بورڈ ہے، 13 میں سے تین مزید موٹرز خراب ہو گئیں، 50 کروڑ روپے مجھے نہیں پرانے ایڈمنسٹریٹر کو دیئے۔دوسری جانب ڈپٹی میئر ارشد وہرہ بھی بے بس دکھائی دئیے، ان کا کہنا تھا کہ یہ بارش قدرتی آفت، کوئی نہیں روک سکتا اور نہ ہی کوئی ادارہ تنہا شہر کو بہتر کر سکتا ہے۔ ڈپٹی میئر کراچی کا یہ بھی کہنا تھا کہ کراچی کیلئے ماسٹر پلان کی ضرورت ہے۔