0

گھٹنے کیلیے مضبوط اور پائیدار مصنوعی کرکری ہڈی

نارتھ کیرولائنا: حادثے، بیماری یا عمر رسیدگی کے نتیجے بہت سے لوگوں کے گھٹنوں میں مستقل درد رہنے لگتا ہے جس کی وجہ سے وہ مستقل اذیت میں مبتلا رہتے ہیں۔ اب امریکی ماہرین نے اس مسئلے کا حل ایک مصنوعی کرکری ہڈی (کارٹلیج) کی شکل میں ایجاد کرلیا ہے جو ابتدائی آزمائشوں کے دوران بہت مضبوط، لچک دار اور پائیدار ثابت ہوئی ہے۔واضح رہے کہ گھٹنوں کے جوڑ پر ایک خاص طرح کی چکنی اور لچک دار بافت ہوتی ہے جو صحیح معنوں میں ہڈی تو نہیں ہوتی لیکن پھر بھی اسے کرکری ہڈی اور چبنی ہڈی جیسے نام دیئے جاتے ہیں۔ کرکری ہڈی میں چکنائی کی وجہ سے گھٹنے موڑنے میں آسانی رہتی ہے اور چلنے پھرنے، اٹھنے بیٹھنے میں بھی تکلیف نہیں ہوتی۔البتہ کسی حادثے، بیماری یا عمر بڑھنے کے ساتھ ساتھ اس کرکری ہڈی کی چکنائی اور لچک بہت کم رہ جاتی ہے جس کی وجہ سے متاثرہ فرد کیلیے چلنا پھرنا اور اٹھنا بیٹھنا تک انتہائی مشکل اور تکلیف دہ ہوجاتا ہے۔مصنوعی کرکری ہڈی کو ڈیوک یونیورسٹی کے ماہرین نے ایک نئی قسم کے ہائیڈروجل سے بنایا ہے جس کی تیاری میں تین الگ الگ اقسام کے پولیمر مادے استعمال کیے گئے ہیں۔ تین پولیمرز کے ملاپ سے تیار ہونے والی اس مصنوعی کرکری ہڈی میں قدرتی ہڈی جیسی لچک، مضبوطی اور پائیداری ایک ساتھ موجود ہیں جبکہ یہ بہت ہلکی پھلکی بھی ہے۔

کیٹاگری میں : صحت

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں