0

پی سی بی کے اعزازی چیئرمین کو بے شمار مراعات حاصل

کراچی: پی سی بی کے اعزازی چیئرمین کو بے شمار مراعات حاصل ہیں۔چیئرمین پی سی بی کا عہدہ پانے کیلیے بڑی بڑی شخصیات خوب کوششیں کرتی ہیں، بظاہر تو یہ پوسٹ اعزازی مگر بھرپور مراعات اسے بہترین بنا دیتی ہیں۔ رکن قومی اسمبلی سید عمران احمد شاہ نے پی سی بی کے بارے میں کچھ عرصے قبل چند سوالات پوچھے تھے،انھیں وفاقی وزیر برائے بین الصوبائی رابطہ ڈاکٹر فہمیدہ مرزا کی معرفت سے جوابات موصول ہوئے،بورڈ آفیشلز کے الاونسز کی تفصیلات تو پہلے ہی سامنے آ گئی تھیں، اب چیئرمین کی مراعات کا بھی انکشاف ہوگیا۔
نمائندہ ایکسپریس کے پاس موجود دستاویز کے مطابق ہیڈ آفس لاہور کا رہائشی نہ ہونے کی صورت میں چیئرمین کو مکمل فرنیشڈ رہائش یا ایک لاکھ روپے ماہانہ دیے جاتے ہیں، پی سی بی کی ویب سائٹ پر موجود تفصیلات کے مطابق احسان مانی کی رہائش پر جولائی 2019 سے جون 2020تک 40 لاکھ24 ہزار 260 روپے خرچ ہوئے ہیں، یعنی ہر ماہ تقریبا 3 لاکھ 35 ہزار روپے رہائش پر صرف ہوتے ہیں۔گزشتہ6سے7 برس میں کسی اور اعزازی چیئرمین نے لاہور میں رہائش پر بورڈ سے اتنی رقم خرچ نہیں کرائی،بورڈ کی پالیسی کے مطابق اگر کوئی چیئرمین شہر میں اپنی پسند کی کسی جگہ پر رہنا پسند کرے تو اسے ایک لاکھ روپے ماہانہ کا مانیٹری الاونس دیا جائے گا،اگر رہائش کی فرنشنگ درکار ہو تو چیئرمین20 لاکھ روپے تک حاصل کر سکتا ہے، یہ فرنیچر بورڈ کی ہی ملکیت شمار ہوتا ہے، تین سالہ دور میں کوئی چیئرمین ایک بار ہی یہ رقم حاصل کرنے کا اہل ہوتا ہے۔احسان مانی نے اب تک اس مد میں 14 لاکھ58 ہزار374 روپے وصول کیے ہیں،یہ پالیسی احسان مانی کے دور میں ہی متعارف کرائی گئی ہے، چیئرمین کو سیکیورٹی گارڈ سمیت گھر کے لیے تین کل وقتی ملازمین رکھنے کی اجازت ہوتی ہے، ان کی تنخواہیں بورڈ براہ راست ادا کرتا ہے، موجودہ چیئرمین نے ایک کل وقتی باورچی اور جز وقتی صفائی والے کو رکھا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں