0

گٹھیا کی دوا سے دل کے مریضوں کو بھی فائدہ

پرتھ: آسٹریلوی ماہرین نے دریافت کیا ہے کہ گٹھیا کی ایک دوا کولچی سین سے دل کے مریضوں بھی بہت فائدہ پہنچتا ہے اور وہ کئی طرح کے امراضِ قبل کی شدت سے محفوظ رہتے ہیں۔ یہ تحقیق یوروپین سوسائٹی آف کارڈیالوجی کی حالیہ آن لائن کانفرنس میں پیش کی گئی۔
واضح رہے کہ کولچی سین ایک قدیم دوا ہے جسے قدرتی حالت میں جنسِ زعفران (کروکس) کے پودے سے حاصل کرکے درد اور سوزش کے علاج میں استعمال کیا جاتا تھا۔ آج یہی دوا مصنوعی طور پر تیار کی جاتی ہے جسے گٹھیا کے مرض میں جوڑوں کا درد ختم کرنے کیلیے عام استعمال کیا جاتا ہے۔پانچ سال سے بھی زیادہ عرصے تک جاری رہنے والی اس تحقیق میں 5,552 رضاکار رجسٹر کیے گئے جو سب کے سب دل کی کسی نہ کسی بیماری میں مبتلا تھے۔ان میں سے نصف کو ایک مہینے تک 0.5 ملی گرام کولچی سین روزانہ کھلائی گئی جبکہ باقی نصف رضاکاروں کو اتنی ہی مقدار میں کوئی اور بے ضرر سی چیز دی گئی۔مطالعے کے اختتام پر معلوم ہوا کہ جن مریضوں نے ایک ماہ تک روزانہ کم مقدار میں کولچی سین استعمال کی تھی، انہیں آئندہ پانچ سال کے دوران فالج، دل کے دورے اور دل کی دیگر تکالیف کا بہت کم سامنا ہوا تھا۔اس مطالعے کی روشنی میں ماہرین نے تجویز دی ہے کہ دل اور شریانوں کے امراض میں مبتلا افراد کیلیے روزانہ کم مقدار میں کولچی سین کا استعمال منظور کرلیا جائے کیونکہ اول تو یہ عام اور کم خرچ دوا ہے؛ اور دوم اس کے ضمنی اثرات (سائیڈ ایفیکٹس) بھی بہت کم ہیں۔

کیٹاگری میں : صحت

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں