0

صرف 1.5 وولٹ بجلی سے سخت جان جراثیم کا خاتمہ


ارکنساس: جرثوموں (بیکٹیریا) کو ہلاک کرنے کے نت نئے طریقوں کی تلاش میں اب ماہرین نے ایک اور تکنیک دریافت کرلی ہے: اگر صرف چند مائیکرو ایمپیئر جتنی بجلی صرف 1.5 وولٹ پر، صرف آدھے گھنٹے تک جراثیم والے محلول میں سے گزاری جائے تو وہ اِن جرثوموں کو پھاڑ ڈالتی ہے اور یوں سخت جان سے سخت جان جراثیم کو بھی موت کے گھاٹ اتار دیتی ہے۔یہ عام سی حقیقت ہے کہ اگر کسی جاندار کے جسم میں سے بجلی گزر جائے تو اس کی موت بھی واقع ہوسکتی ہے۔ بجلی کی کرسی سے دی جانے والی سزائے موت اور بجلی کے جھٹکوں سے ہونے والی اموات اس کے واضح ثبوت ہیں۔ لیکن اگر بجلی اتنی کمزور رکھی جائے کہ انسانی جسم کیلیے بالکل بے ضرر ہو تو کیا اس سے جراثیم بھی ہلاک کیے جاسکتے ہیں؟اس سوال کا جواب ڈھونڈنے کیلیے یونیورسٹی آف ارکنساس کے ماہرین نے پیٹری ڈش میں رکھے گئے جرثوموں پر تجربات شروع کیے۔ ان میں وہ جراثیم بھی شامل تھے جو اینٹی بایوٹکس کے خلاف مزاحمت پیدا کرچکے ہیں اور صحت کے حوالے سے شدید مسائل کو جنم دے رہے ہیں۔مختلف ایمپیئر اور وولٹیج آزمانے کے بعد انہیں معلوم ہوا کہ صرف چند مائیکرو ایمپیئر والی بجلی 1.5 وولٹ پر آدھے گھنٹے کیلیے ان جرثوموں والے محلول میں سے گزاری جائے تو اس سے جرثوموں کی خلوی جھلیاں پھٹ جاتی ہیں، ان میں بند خلوی مواد بکھر جاتا ہے اور یہ جراثیم ٹکڑے ٹکڑے ہو کر ختم ہوجاتے ہیں۔

کیٹاگری میں : صحت

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں