0

فوجی عدالت کی سزا کیخلاف اپیل؛ عزیر بلوچ کے وکیل کو وکالت نامہ جمع کرانے کا حکم

کراچی: سندھ ہائی کورٹ نے گینگ وار کے سرغنہ عزیر بلوچ کی ملٹری کورٹ کی سزا کیخلاف اپیل پر وکیل صفائی کو وکالت نامہ جمع کرانے کا حکم دے دیا۔ہائی کورٹ میں گینگ وار کے سرغنہ عزیر بلوچ کی ملٹری کورٹ کی سزا کے خلاف اپیل کی سماعت ہوئی، عدالت نے وکیل صفائی سے استفسار کیا کہ عزیر بلوچ کی جانب سے وکالت نامہ کیوں نہیں داخل کرایا گیا؟ عدالت نے آئندہ سماعت پر عزیر بلوچ کی طرف سے وکالت نامہ جمع کرانے کی ہدایت کرتے ہوئے سماعت غیر معینہ مدت کے لئے ملتوی کردی۔یاد رہے ملزم کی والدہ نے عدالت میں ملٹری کورٹ کے فیصلے کیخلاف اپیل دائر کی تھی جس میں مقف اپنایا گیا تھا کہ میڈیا رپورٹس کے مطابق عزیر بلوچ کو ملٹری کورٹ نے 12 سال قید کی سزا سنائی ہے، عزیر بلوچ کو فوجی عدالت سے سینٹرل جیل کراچی منتقل کرنے کی خبر شائع ہوئی ہے، جیل حکام نے عزیر بلوچ سے ملاقات سے انکار کردیا ہے، جیل حکام کو عزیر بلوچ جیل منتقل کرنے کے باوجود ملٹری کورٹ کے فیصلے کی کاپی فراہم نہیں کی گئی، چیف جسٹس آف پاکستان، چیف آف آرمی اسٹاف اور دیگر کو ملٹری کورٹ کے فیصلے کی کاپی حاصل کرنے کے لیے خطوط بھی لکھے۔درخواست میں کہا گیا کہ عزیر بلوچ کو سزا دیتے وقت انصاف کے تقاضے پورے نہیں کیے گئے، ملٹری کورٹ کے فیصلے کے بعد ملزم کو فیصلیکی نقول فراہم کرنا بنیادی حق ہے تاکہ اپیل دائر کرسکے، عزیر بلوچ کو ملٹری کورٹ کی جانب سے دی گئی سزا کالعدم قرار دی جائے، عزیر بلوچ کے خلاف جاری فیصلے کی نقول فراہم کرنے کا حکم دیا جائے اور عزیر بلوچ سے اس کی والدہ کی ملاقات کا حکم دیا جائے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں