0

سلمان شہباز کے چپڑاسی کے بینک اکانٹ میں 2.3 ارب روپیکاانکشاف

لاہور: سابق وزیر اعلی پنجاب میاں شہباز شریف کے چھوٹے بیٹے سلمان شہباز کے ملازمین کے بینک اکانٹ میں بھی 9.5 ارب روپے کا انکشاف ہوا ہے۔تفصیلات کے مطابق یہ ملازمین رمضان شوگر مل اور العریبیہ شوگر مل میں کام کرتے ہیں۔ ایف آئی اے نے ان اکانٹس کی تفصیلات مشترکہ تحقیقاتی ٹیم کو فراہم کر دی ہیں۔ایف آئی اے ذرائع کے مطابق سلمان شہباز کے چپڑاسی مقصود کے بینک اکانٹ میں 2.3 ارب روپے کا انکشاف ہوا۔ مقصود چپڑاسی نے ان پیسوں سے ڈیڑھ کروڑ روپے کی ایک قیمتی مرسڈیذ کار بھی خریدی جبکہ شبیر قریشی کلرک کے اکانٹ میں ایک ارب، رانا وسیم کے اکانٹ میں 24 کروڑ، اقرار کے اکانٹ میں 64 کروڑ، تنویر الحق کلرک کے اکانٹ میں 52 کروڑ، خضر حیات اکانٹ کلرک کے اکانٹ میں 1.2 ارب روپے، توقیر الدین کے اکانٹ میں 45 کروڑ روپے جمع کروائے گئے اور کچہ رقم نکلوائی بھی گئی۔ایف آئی ایبینکنگ کرائم سرکل لاہور نے ان خفیہ بینک اکانٹس کا سراغ لگایا اور معلومات مشترکہ تحقیقاتی ٹیم کے فراہم کر دی ہیں جبکہ اس سلسلے میں ایف ائی اے کے بینکنگ کرائم سرکل نے تحقیقات کا دائرہ مزید وسیع کر دیا اور تمام بینکوں سے ان ملازمین کے نام پر خفیہ اکاونٹ کی تفصیلات طلب کی ہیں جبکہ اسی کیس میں سکیورٹی ایکسچینج کمیشن اف پاکستان ایس ای سی پی سے ملازمین کے نام پر کمپنیوں کی تفصیلات بھی طلب کرلی گئی ہیں۔یہ تفصیلات ملنے کے بعد ایک مکمل رپورٹ مشترکہ تحقیقاتی ٹیم کو فراہم کر دی جائیں گی۔ بعدازاں ایف آئی اے کمبائن انوسٹی گیشن ٹیم نے آج شریف فیملی کے ملازمین کو تحقیقات کے لئے طلب کر رکھا تھا۔تحقیقاتی ٹیم کے سامنے العربیہ شوگر ملز کے ملازمین پیش ہوئے۔ انہوں نے اپنے بنک اکانٹ میں موجود اربوں روپے کی رقم بارے تحقیقاتی ٹیم کو بیان ریکارڈ کروایا۔ملازم رانا وسیم. اقرار، تنویر الحق و دیگر ملازمین ایف آئی اے میں پیش ہوئے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں