0

سندھ حکومت ختم کرنے کی دھمکی دی گئی، خاموش اس لیے ہوں کہ تحقیقات ہورہی ہیں، مراد علی شاہ

کراچی: وزیر اعلی سندھ سید مراد علی شاہ نے کہا ہے کہ مجھے سندھ حکومت ختم کرنے کی دھمکی دی گئی تھی، چپ اس لیے ہوں کہ تحقیقات ہورہی ہیں اگر زبان کھولی تو آپ بھی کانوں کو ہاتھ لگائیں گے۔یہ بات انہوں ںے سندھ اسمبلی میں اظہار خیال کرتے ہوئے کہی۔ وزیراعلی نے کہا کہ 18 اکتوبر کے جلسے سے ساری حکومت گھبرا رہی ہے اور بوکھلاہٹ کا شکار ہوچکی ہے، پولیس پر دبا ڈال کر جعلی مقدمہ بنایا گیا، ایک مفرور آدمی کے ذریعے مقدمہ درج کرایا گیا، مقدمہ درج کرانے کے لیے دھمکی دی گئی جب کہ بلاول بھٹو نے پولیس کے ساتھ اظہار یکجہتی کیا، ہم سندھ پولیس کے ساتھ ہیں۔وزیر اعلی سندھ نے کہا کہ کراچی میں پی ڈی ایم کے جلسے کے بعد حکومتی حلقوں میں گھبراہٹ پھیل گئی تھی، یہ پہلے تو تھانوں میں گئے پھر پولیس کو دبا میں لینا شروع کیا، جب پولیس نے اپنا کردار ادا کیا پھر بھی پی ٹی آئی والے شور شرابہ کرتے رہے۔وزیر اعلی سندھ نے کہا کہ بہت سی چیزیں میں بتا نہیں سکتا، وزیر اعلی سندھ نے کہا کہ مجھے سندھ حکومت ختم کرنے کی دھمکی دی گئی اب بھی چپ ہوں کیونکہ تحقیقات ہورہی ہیں زبان کھولوں گا تو لوگ کانوں کو ہاتھ لگائیں گے، مہان کو ایک غیر مہذب طریقے سے گرفتار کیا گیا جس پر پوری سندھ دھرتی شرمندہ ہے، ہماری حکومت ہمارے مہمانوں سے بڑھ کر نہیں ہے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں