0

کورونا وائرس کی نئی قسم بدترین وبائی لہر کا باعث بن سکتی ہے، ماہرین


لندن/ برلن: وبائی امراض کے یورپی ماہرین نے خبردار کیا ہے کہ اگر احتیاط نہ برتی گئی تو ناول کورونا وائرس کی نئی قسم سے ایک اور عالمی وبا جنم لے سکتی ہے جو ممکنہ طور پر بہت زیادہ بری ہوگی۔واضح رہے کہ گزشتہ ماہ سے برطانیہ میں ناول کورونا وائرس کی ایک نئی قسم سامنے آچکی ہے جسے ماہرین نے B.1.1.7 کا نام دیا ہے۔اب تک کی معلومات کے مطابق، یہ کووِڈ 19 کی عالمی وبا کا باعث بننے والے کورونا وائرس کے مقابلے میں 50 سے 70 فیصد تک زیادہ پھیلنے کی صلاحیت رکھتا ہے۔بی ون ون سیون (B.1.1.7) پہلے پہل دسمبر 2020 میں برطانیہ کے جنوب مشرقی علاقوں میں سامنے آیا تھا اور صرف ایک ماہ میں اس سے متاثر ہونے والے افراد کی تعداد، کورونا وائرس کی دیگر اقسام (variants) کے نئے متاثرین سے زیادہ ہوچکی ہے۔وبائی امراض کے مشہور ماہر اور ویلکم ٹرسٹ برطانیہ کے سربراہ، ڈاکٹر جیریمی فارر نے تشویش ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ بی ون ون سیون اپنے پھیلا کی زیادہ صلاحیت کے ساتھ موجودہ سال 2021 میں کورونا وائرس کی غالب قسم اور بہت بری وبا کا باعث بن سکتا ہے۔

کیٹاگری میں : صحت

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں