0

پنجاب اور خیبرپختونخوا کی سینیٹ انتخابات اوپن بیلٹ سے کرانے کی حمایت


صوبائی حکومتوں نے صدارتی ریفرنس کیس میں سپریم کورٹ میں جواب جمع کرادیا۔کے پی حکومت نے کہا کہ اوپن بیلٹ سے سینیٹ انتخابات کیلئے قانون میں ترمیم لازمی ہوگی، شفاف انتخابات ہی جمہوریت کی بنیاد ہیں، اپنی جماعت کیخلاف ووٹ دینا بے وفائی ہے، خفیہ ووٹنگ کا استعمال ماضی میں انتخابات کی روح کیخلاف ہوا اور سینیٹ انتخابات پر کرپشن کے الزامات لگتے رہے، عدالت قرار دے کہ پارلیمان اور حکومت الیکشن ایکٹ 2017 میں ترمیم کر سکتی ہیں۔ایڈووکیٹ جنرل پنجاب نے سپریم کورٹ میں جمع کرائے گئے جواب میں صدارتی ریفرنس کی حمایت کرتے ہوئے کہا کہ اراکین اسمبلی اپنے ذاتی مفاد کیلئے پارٹی ڈسپلن کے خلاف ووٹ دیتے ہیں، ان کے اس اقدام سے جمہوریت کے اصولوں کی خلاف ورزی ہوتی ہے، اراکین اسمبلیوں کا انتخاب عوام کے ووٹوں سے کیا جاتا ہے، منتخب اراکین سینیٹرز کا انتخاب کرتے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں