0

کینسر کو ہرانے والی خاتون، اب خلانورد بننے کے لیے تیار


ٹیکساس: کینسر کو شکست دینے والی باہمت لڑکی ہیلی ارسینا اب نجی کمپنی سے خلا میں جانے والی کم عمر ترین خلانورد بننے کے لیے تیار ہیں۔ اس وقت وہ سینٹ جیوڈ نامی ہسپتال میں طبی معاون ہیں۔اب وہ نجی کمپنی کی جانب سے شہریوں کے لیے مخصوص انسپائریشن فور نامی منصوبے کے تحت خلا میں جائیں گی۔ چار خلانوردوں میں سے کوئی بھی باقاعدہ تربیت یافتہ ایسٹروناٹ نہیں ۔ اکتوبر 2021 میں وہ شفٹ فور پیمنٹس کے سی ای او جیرڈ آئزک مین کے ساتھ خلا میں جائیں گی۔ جیرڈ نے ان کے تمام اخراجات اٹھائیں گے۔ جیرڈ اس مشن سے اپنے ہسپتال کے لیے 20 کروڑ ڈالر کی رقم جمع کرنا چاہتے ہیں۔لیکن جب ہیلی کو ان کی کمپنی سے یہ پیشکش کی گئی تو اس وقت یہ منصوبہ خفیہ تھا۔ کامیابی کی صورت میں وہ امریکہ کی کم عمر ترین خلانورد بن جائیں گی۔ ساتھ ہی وہ بچپن میں کینسر سے شفا پانے والی پہلی خلانورد بھی ہوں گی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں