0

ہمیں 46 فیصد پانی کم دیا جارہا ہے وفاق ظلم بند کرے، سندھ حکومت


کراچی: سندھ حکومت نے کہا ہے کہ ارسا سندھ کے حصے کا پانی نہیں دے رہی، سندھ میں شدید خشک سالی ہوچکی، ہمیں 46 فیصد پانی کم دیا جارہا ہے جس کی وجہ سے لگی ہوئی فصلیں بچانا بھی محال ہوگیا۔صوبائی وزیر زراعت اسماعیل راہو نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ عمران خان کی سندھ دشمنی کی وجہ سے سندھ کی زراعت تباہ ہو رہی ہے، کاشت کاروں کو نئی فصل لگانے کے لیے تو دور کی بات لگی ہوئی فصلوں کا بچانا بھی محال ہوگیا، پنجاب فقط 8 فیصد کمی لے رہا ہے جب کہ سندھ کو 46 فیصد پانی کم دیا جارہاہے۔انہوں نے کہا کہ وفاق کو سندھ کے ساتھ اس ظلم کا حساب دینا ہوگا، اس وقت سندھ کے تینوں بیراجوں کی حالت بہت ہی خراب ہے، گڈو بیراج کو اس وقت 12 ہزار 6 سو کیوسک پانی ملنا چاہیے جسے فقط 6 ہزار 632 کیوسک پانی مل رہا ہے، گڈو بیراج کو 47.4 فیصد پانی کم دیا جا رہا ہے، سکھر بیراج کو جہاں 43 ہزار کیوسک پانی ملنا چاہیے وہاں فقط 27 ہزار 339 کیوسک دستیاب ہے یعنی سکھر کو 36.6 شارٹیج کا سامنا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں