0

مقبوضہ کشمیر پر مودی کی اے پی سی ناکام ہوگئی، وزیرخارجہ


اسلام آباد: وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی کا کہنا ہے کہ 2019 کے غیرقانونی اقدامات کے بعد بھارتی خواب خاک میں مل چکے۔ شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ ہندوستان میں 24 جون کو دہلی میں 14 کشمیری قائدین کو مدعو کیا گیا، دہلی کی نشست میں مقبوضہ جموں و کشمیر کے مستقبل پر بے نتیجہ گفتگو ہوئی، دہلی کی نشست میں کل جماعتی حریت کانفرنس کو نہ دعوت دی گئی، نہ موجود تھے، دہلی نشست سے بھارتی وزیراعظم نریندر مودی نے جان لیا کہ کشمیری دہلی سے دور فاصلے پر ہیں۔ کل جماعتی حریت کانفرنس نے ہمیشہ حق خودارادیت کی بات کی، حریت رہنماں نے مسئلہ کشمیر کے سلامتی کونسل کی قراردادوں کے مطابق دیرپا حل کی بات کی۔وزیرخارجہ کا کہنا تھا کہ دہلی کی بیٹھک، گفتن، نشستن، برخاستن کی عمدہ مثال تھی اور یہ ناٹک تھا، اس سے بھارت کا بین الاقوامی تشخص شدید متاثر ہوا اور مودی کی شخصیت پر سوال اٹھائے گئے، ہندوستان اور مودی نے خفت مٹانے اور بہتری کے لیے دہلی ڈرامہ کیا گیا، مشترکہ کشمیری قیادت بلائی گئی تو اس نے بھی 5 اگست 2019 کے غیرقانونی اقدامات کو واپس لینے کا مطالبہ کیا، دہلی نشست سے تاثر ملتا ہے کہ کشمیر سے مکمل ریاستی تشخص بحالی کا اظہار کیا گیا ہے، اور 2019 کے غیرقانونی اقدامات کے بعد بھارتی خواب خاک میں مل چکے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں