0

وکلا کا سپریم کورٹ میں ججز کی تقرریوں پر احتجاج مزید سخت کرنے کا فیصلہ


اسلام آباد: وکلا نے سپریم کورٹ میں ججز تقریوں پر احتجاج مزید سخت کرنے کا فیصلہ کرلیا ہے۔ سابق چیف جسٹس افتخار چورہدری کی بحالی کے بعد پہلی مرتبہ وکلا 9 ستمبر کو سپریم کورٹ کی کارروائی کا بائیکاٹ کریں گے۔ صدر سپریم کورٹ بار لطیف آفریدی نے اپنے خط کے ذریعے چیف جسٹس پاکستان کو آگاہ کردیا ہے۔وکلا نے اعلی عدلیہ ججز تقرریوں پر احتجاج مزید سخت کرنے کا فیصلہ کرلیا ہے جس میں سب اہم فیصلہ سپریم کورٹ کے بائیکاٹ کا کیا گیا ہے۔ اس حوالے سے صدر سپریم کورٹ بار لطیف آفریدی نے رجسڑار سپریم کورٹ کو ایک خط لکھا ہے جس میں بتایا گیا ہے کہ 21 اگست کو کراچی میں ہونے والے کنونشن میں تمام وکلا نمائیندوں نے 9 ستمبر کو ملک گیر ہڑتال کا اعلان کیا ہے تاہم اس بار وکلا 9 ستمبر کو سپریم کورٹ سمیت ملک کی تمام چھوٹی بڑی عدالتوں کو بائیکاٹ کریں گے اور کوئی بھی وکیل عدالتوں میں پیش نہیں ہوگا۔صدر سپریم کورٹ بار نے خط میں مزید کہا ہے کہ وکلا کے متقفہ فیصلے کی سپریم کورٹ بار بھی عمل کرے گی اس لیے ہڑتال کے فیصلے کے بارے میں چیف جسٹس پاکستان کو آگاہ کردیا جائے تاکہ 9 ستمبر کو کسی قسم کا ناخوشگوار واقعہ نہ ہو۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں