0

آلودہ اور شوروالے شہر میں تین سالہ رہائش بھی دل کو متاثرکرسکتی ہے


کوپن ہیگن: ایک بہت بڑے سروے سے انکشاف ہوا ہے کہ آلودہ ار شوروالے ایک شہر میں صرف تین سال رہنے سے بھی دل کے دورے بلکہ ہارٹ فیل کا خطرہ 43 فیصد تک بڑھ سکتا ہے۔اس کے علاوہ کئی تحقیقات سے معلوم ہوچکا ہے کہ فضائی آلودگی سے ڈیمنشیا، مردانہ کمزوری، سانس کے امراض، توجہ اور ارتکاز میں کمی، بے اولادی اور دیگر امراض بھی بڑھنے لگتے ہیں یا ان سے متاثرہونے کا خطرہ بڑھ جاتا ہے۔اب ڈنمارک کی تحقیق سے آلودہ اور شور بھرے شہروں اور امراضِ قلب کے درمیان اہم تعلق دریافت ہوا ہے۔ بالخصوص شہروں میں رہنے والی 22 ہزار خواتین کو مسلسل دو عشروں تک نوٹ کیا گیا ہے۔ یہاں تک کہ شور سے بھی وہ متاثر ہوتی ہیں اور اس طرح ان میں ہارٹ فیل کا خطرہ 43 فیصد تک بڑھ جاتا ہے۔دوسری جانب آلودہ فضا اور زہریلے ذرات اور امراض کے درمیان تعلق کو بھی مدِ نظر رکھا گیا۔ ان میں موجود پی ایم 2.5 اور دیگر مہلک ذرات خون میں شامل ہوکر دل، دماغ، پھیپھڑوں اور دیگر نظام تک پہنچ سکتے ہیں۔ اس سے معلوم ہوا کہ ڈھائی مائیکرون کے آلودہ ذرات بزرگوں، بچوں اور حاملہ ماں کو متاثرکرسکتے ہیں۔

کیٹاگری میں : صحت

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں