0

سندھ کے بچے غذائی قلت، کمزوری اور پست قامت میں سرِفہرست


کراچی: ایک تحقیق سے معلوم ہوا ہے کہ بچوں میں بھوک اور غذائی قلت سے کم وزن اور کوتاہ قد کی شرح صوبہ سندھ میں سب سے زیادہ ہے۔اگرچہ یہ تحقیق 2018 اور 2014 میں کی جاچکی ہے لیکن اس ضمن میں مزید کچھ شہادتیں سامنے آئی ہیں۔ نیچر سائنٹفک رپورٹس میں شائع ایک رپورٹ کے مطابق سندھ کے بچوں میں بھوک سے اپنی عمر کے لحاظ سے چھوٹے قد (اسٹنٹنگ) اور گوشت پوست کی کمی (ویسٹنگ) کا پروپونسٹی اسکور میچنگ طریقے سے جائزہ لیا گیا ہے۔تحقیق میں صوبہ سندھ کے 28 اضلاع کے شہروں اور دیہاتوں کے 19500 گھرانوں میں پانچ سال تک کے ہزاروں بچوں کا ڈیٹا لیا گیا ہے۔ کل 7781 بچوں کا جائزہ لیا گیا ہے۔ ان میں 5685 بچے اپنی عمرکے لحاظ سے پورے قد پر ملے جن کا وزن اور جسامت بھی نارمل تھی۔ لیکن 2095 بچے ایسے ملے جن کی پیدائش کے وقت وزن اور جسامت کم تھی اور یہ رحجان پانچ برس کی عمر تک برقرار رہا

کیٹاگری میں : صحت

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں