0

چاول کے چھلکے سے دنیا کی پہلی ایل ای ڈی تیار


ہیروشیما: ایک دلچسپ کاوش میں جاپانی ماہرین نے پہلی مرتبہ چاول کی بھوسی سے روشنی خارج کرنے والی ایل ای ڈی بنائی ہے جو کم خرچ اور ماحول دوست اختراع ہے۔پوری دنیا میں چاول کی صفائی کے دوران ہر سال دس کروڑ ٹن چاول کا چھلکا یا بھوسی پیدا ہوتی ہے۔ اب ہیروشیما یونیورسٹی کے سائنسدانوں نے اس فالتو چھلکے کو بازیافت (ری سائیکل) کرکے دنیا کا پہلا سلیکون کوانٹم ڈوٹ (کیو ڈی) بنایا ہے اور اسی پر مشتمل ایل ای ڈی تیار کی ہے۔ اس طرح زرعی کچرے کو ارزاں اور جدید ترین روشن ڈائیوڈ میں بدلا جاسکتا ہے۔اس کی تحقیق امریکی کیمیکل سوسائٹی کے جرنل اے سی ایس سسٹین ایبل کیمسٹری اینڈ انجینیئرنگ میں شائع ہوئی ہے۔روایتی کوانٹم ڈوٹس میں عموما کیڈمیئم، سیسہ اور دیگر زہریلی دھات استعمال ہوتی ہے۔ لیکن چاول کے چھلکے کی نئی ٹیکنالوجی سے یہ کام کم زہریلا اور ماحول دوست شکل اختیار کرجاتا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں