0

کالعدم ٹی ٹی پی سے مذاکرات بغیر کسی بڑی پیشرفت کے ختم، سیز فائر برقرار


اسلام آباد: حکومت پاکستان کی جانب سے کالعدم تحریک طالبان سے مذاکرات کے لیے کابل جانے والا 57 رکنی جرگہ کسی بڑی پیش رفت کے بغیر واپس لوٹ آیا تاہم غیر معینہ مدت تک سیز فائر پر اتفاق برقرار ہے۔ ڈان ڈاٹ کام کے مطابق طالبان کی ثالثی میں حکومت پاکستان اور کالعدم ٹی ٹی پی کے درمیان کابل کے انٹر کانٹینینٹل ہوٹل میں دو روز تک جاری رہنے والے مذاکرات ختم ہوگئے جس کے بعد حکومت پاکستان کا قبائلی عمائدین، سیاست دانوں اور ارکان پارلیمنٹ پر مشتمل 57 رکنی جرگہ واپس آگیا۔جرگہ کے ایک سینئر رکن نے ڈان سے بات کرتے ہوئے کہا کہ مجموعی طور پر ماحول بہت مثبت رہا۔ ٹی ٹی پی کا اپنا نقطہ نظر تھا اور ہم اپنا موقف رکھتے ہیں اس لیے طویل بحثیں ہوئیں۔ ان کی خواہش تھی کہ کے پی کے سے انضمام ختم کرکے فاٹا کی پرانی حیثیت بحال کی جائے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں